جہلم

بھائی نے مبینہ طور پر اپنی چھوٹی بہن کو سفاکانہ تشدد کر کے قتل جبکہ 2 بہنوں کو شدید زخمی کر دیا

جہلم(چوہدری عابد محمود+عامرکیانی سے)تھانہ جلالپور شریف کا عملہ خواب خرگوش کے مزے لوٹتا رہا ، حقیقی بھائی نے مبینہ طور پر اپنی چھوٹی بہن کو سفاکانہ تشدد کر کے قتل جبکہ 2 بہنوں کو شدید زخمی کر دیا۔

زخمیوں میں 16 سالہ سعدیہ بتول اور6 سالہ طیبہ بتول شامل ہیں ، حالت تشویش ناک ہونے پرآر ایچ سی جلالپورشریف کے ڈاکٹروں نے جہلم جبکہ ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کے ڈاکٹروں نے پمز ہسپتال اسلام آباد ریفر کر دیا،تھانہ جلالپور شریف کی پولیس 5 کلو میٹر کا سفر 15 گھنٹے میں طے کرنے کے بعد جائے وقوعہ پر پہنچی، لواحقین کا پولیس کے خلاف شدید احتجاج۔

تفصیلات کے مطابق تھانہ جلالپور شریف کے نواحی علاقہ پنڈی سید پور میں حقیقی بھائی نے مبینہ طور پر اپنی چھوٹی بہن کو قتل جبکہ 2 بہنوں سعدیہ بتول اور طیبہ بتول کو شدید زخمی کر دیا ، جنہیں رورل ہیلتھ سینٹر جلالپور شریف پہنچایا اور ہسپتال عملے کو بتایا کہ حادثہ پیش آیا ہے جس پر ہسپتال عملے نے ایک بچی کے جاں بحق ہونے کی تصدیق کر دی جبکہ باقی دونوں بچیوںکو ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرہسپتال جہلم ریفر کر دیا۔

ذرائع نے انکشاف کیاہے کہ تنویر نامی درندہ صفت بھائی نے ڈنڈوں اور لوہے کے راڈ سے بہنوں کو وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا ، قابل زکر بات یہ ہے کہ حسب سابق روایت تھانہ جلالپور شریف کی فرض شناس پولیس شام 6 بجے ہونے والے قتل کے واقعہ کی تفتیش کے لئے اگلے روز صبح ساڑھے 9 بجے جائے وقوعہ پر پہنچی جس سے ظاہر ہوتاہے کہ 5 کلو میٹر کا سفر جلالپور شریف پولیس نے 15 گھنٹوں میں طے کیا ۔

پولیس نے ضروری کارروائی کے بعد مقتولہ کی میت ورثاء کے حوالے کر دی ، جبکہ بہنوں کو قتل و زخمی کرنے والے ملزم نے تھانہ جلالپور شریف میں گرفتاری پیش کر دی ہے ۔ پولیس نے والدہ کی مدعیت میں مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کر دی ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button