جہلماہم خبریں

سانحہ لیبیا میں ہلاک 18 پاکستانیوں کا مرکزی ملزم جہلم سے 4 ساتھیوں سمیت گرفتار

جہلم: ایف آئی اے نے جہلم میں چھاپہ مار کرسانحہ لیبیا میں ہلاک ہونے والے18 پاکستانیوں کا مرکزی ملزم مبشر کا اسکے چار ساتھیوں سمیت گرفتار کر لیا ان کے قبضہ سے9 پاسپورٹ مختلف موبائلز سمز، ویزوں کی کاپیاں اور ایک کرولہ گاڑی برآمد کرلی ۔

ڈپٹی ڈائریکٹر ایف آئی اے مفخرعدیل کے مطابق چند روز قبل اچھے مستقبل کی خاطر بیرون ملک جانے والے پاکستانیوں کی کشتی کو لیبیا کے سمندر میں حادثہ پیش آیا جس میں جاں بحق ہونے والے 8 افراد کا تعلق گوجرانوالہ ڈویژن سے تھا حادثے کی اطلاع ملتے ہی ایف آئی اے نے جاں بحق امیگرانٹس کے لواحقین کی شکایات پر متعدد مقدمات درج کرکے ایجنٹوں کی گرفتاری کے لئے بڑے پیمانے پر کریک ڈاون شروع کر دیا۔

انہوں نے کہا کہ سانحہ لیبیا میں ملوث ملزم گرفتاری کے خوف سے روپوش ہو چکا تھا جس کی گرفتاری کے لئے ایس ایچ او ایف آئی اے محسن وحید بٹ کو خصوصی ٹاسک دیا گیا جس نے اپنی ماہرانہ صلاحیتوں کو استعمال کرتے ہوئے جدید سائینٹفک طریقوں سے مرکزی ملزم مبشر کو ٹریس کرکے اس کے چار ساتھیوں احمد خان، محمد شفیع،طاہر اور نظر سمیت گرفتار کر لیا۔

ڈپٹی ڈائریکٹر ایف آئی اے مفخر عدیل نے بتایا کہ سانحہ لیبیا میں جاں بحق امیگرانٹس کے لواحقین نے زیادہ مقدمات میں ایجنٹ مبشر کو نامزد کیا ہے گرفتار مرکزی ایجنٹ نے انسانی اسمگلنگ کا مکمل نٹ ورک بنا رکھا تھا جو سادہ لوح لوگوں کو بیرون ملک بھجواتے تھے آج مبشر کو پورے نیٹ ورک کے ساتھ گرفتار کرلیا گیا ہے جو کہ ایف آئی اے پولیس کی ٹھوس کامیابی ہے جس کا مکمل کریڈٹ محسن وحید بٹ کو جاتا ہے جس نے اپنی ٹیم کے ساتھ دن رات انتھک محنت کی۔

ڈپٹی ڈائریکٹر مفخر عدیل نے مزید بتایا گوجرانوالہ سرکل سے انسانی سمگلنگ کا خاتمہ ان کی اولین ترجیع ہے انسانی سمگلروں اور لینڈ روٹ کے ایجنٹوں کا گھیرا تنگ کر دیا گیا ہے ایسے لوگ کسی معافی کے مستحق نہیں ہیں انسانی اسمگلنگ میں ملوث افراد کے خلاف بلا امتیاز کریک ڈاون جاری رہے گا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button