جہلم

جہلم میں شدید گرمی اور بجلی کی لوڈشیڈنگ، درجہ حرارت45 ڈگری سینٹی گریڈ سے تجاوز کر گیا، عوام پریشان

جہلم: شہر اور گردونواح میں جمعرات کے روز بھی سورج مسلسل آگ برساتا رہا، بعض علاقوں میں زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت45 ڈگری سینٹی گریڈ تک چلا گیا اس دوران بجلی کی اعلانیہ و غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ نے شہریوں کی مشکلات میں مزید اضافہ کردیا، شہر کے مختلف علاقوں میں کئی کئی گھنٹے اور دن بھر بجلی کی آنکھ مچولی جاری رہی، آئیسکو سرکل واپڈا کے افسران و ملازمین نے شہریوں کو مشکلات میں مبتلا کرکے رکھ دیا ، واپڈا حکام کی طرف سے گرمیوں میں بجلی کی لوڈشیڈنگ نہ کرنے کے دعوے ہوا میں اڑ گئے۔

تفصیلات کے مطابق موسم گرما کی شدت میں اضافے کے ساتھ ہی آئیسکو واپڈا حکام نے بجلی کی بدترین لوڈشیڈنگ کر کے شدید گرمی میں شہریوں کا جینا دوبھر کرکے رکھ دیا ہے ، اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے ساتھ ساتھ غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ بھی تواتر کے ساتھ جاری ہے ، ضعیف العمر افراد، بچے ، خواتین اور بیمار افراد بلبلا اٹھے ہیں۔

ہسپتالوں میں داخل مریضوں ، پلازوں میں مقیم خانداروں اور جیل میں پابند سلاسل قیدیوں کا واپڈا کے ملازمین نے الگ سے ریمانڈ لینا شروع کر رکھا ہے ۔ بعض علاقوں میں وولٹیج کی کمی بیشی کی وجہ سے صارفین کی الیکٹرونکس مصنوعات خراب ہونا شروع ہو چکی ہیں۔

دوسری جانب واپڈا حکام کا کہنا ہے کہ گریڈ اسٹیشن میں وولٹیج کی کمی بیشی کو کنٹرول کرنے کے لئے اعلیٰ حکام کو مطلع کر دیا گیا ہے ، شہریوں نے اعلانیہ و غیر اعلانیہ بجلی بندش کو محنت کش طبقہ کے لئے معاشی قتل قرار دیا ہے، طلباء و طالبات کے امتحانات بھی قریب ہیں۔

صارفین کا کہنا ہے کہ بجلی کی بار بار بندش سے انکی لاکھوں روپے کے قیمتی اشیاء جن میں جرنیٹر یو پی ایس، ڈیپ فریزر، مائکروویو اون ، ایل سی ڈیز جلنے کے خطرات لاحق ہوچکے ہیں ، جبکہ ہسپتالوں میں آپریشن بجلی کی بندش کیوجہ سے التواء کا شکار ہو رہے ہیں۔

صارفین کا کہنا ہے کہ شدید گرمی میں بجلی کی آنکھ مچولی سے شہری تنگ آ چکے ہیں ، شہریوں نے وزیراعظم پاکستان ، چیف جسٹس آف پاکستان ، وفاقی وزیر پانی و بجلی سے مطالبہ کیا ہے کہ بجلی کی فراہمی اور ولٹیج کی کمی کے مسئلے کو ترجیح بنیادوں پر حل کروایا جائے شہریوں کی مشکلات میں کمی واقع ہو سکے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button