دینہ

پولیس چوکی سٹی دینہ کی عمارت چھوٹی ہونے کے ساتھ ساتھ بے پناہ مسائل کا شکار

دینہ: پولیس چوکی سٹی دینہ کی عمارت چھوٹی ہونے کے ساتھ ساتھ بے پناہ مسائل کا شکار ،پولیس ملازمین کی رہائش کے لیے کوئی مناسب جگہ موجود نہیں ،تفتیشی افسران کے لیے صرف ایک کمرہ موجود ،مجرموں کے لیے کوئی بیرک کی سہولت میسر نہیں۔

شہر کی آبادی کے تناسب سے ملازمین کی تعداد انتہائی کم ہے ،کسی بھی ایمرجنسی کی صورتحال سے نمٹنے کے لیے دوسرے تھانوں سے نفری کو طلب کرنا پڑتا ہے،ملازمین کی ہائی کورٹ میں پیشی کی وجہ سے بہت سے مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے ،عمارت چھوٹی ہونے کی وجہ سے کسی بھی گاڑی کو وہاں کھڑا کرنا نا ممکن ہو جاتا ہے مجبورا گاڑیوں کو تھانہ دینہ منتقل کرنا پڑتا ہے،چوکی سٹی دینہ سیکورٹی کے حوالے سے بھی مناسب جگہ پر موجود نہیں ہے ،عوام الناس کا ڈی پی او جہلم عبدالغفار قیصرانی سے نوٹس کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق چوکی سٹی دینہ کو بے پناہ مسائل کا سامنا ہے جس میں سب سے بڑا مسئلہ چوکی سٹی دینہ کی عمارت میں کمروں کی تعداد میں کمی کا ہے جس میں ملازمین کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے،ملازمین کی رہائش کے لیے کوئی کمرے موجود نہیں ہیں مجبورا ملازمین کو پرائیویٹ کمرے لے کر رہنا پڑتا ہے جبکہ ان کی تنخواہ کو اگر دیکھا جائے تو یہ اضافی بوجھ بھی ان پر پڑ رہا ہے۔

تفتیشی افسران کے پاس صرف ایک کمرہ موجود ہے جس میں صرف ایک انسپکٹر ہی اپناگزارہ بمشکل کر سکتا ہے،مجرموں کو رکھنے کے لیے باقاعدہ کوئی بیرک موجود نہیں اسی بیرک میں مجرم رکھے جاتے ہیں جہاں بیچارے پولیس ملازمین تھکے ہارے ریسٹ کرتے ہیں ،اگر ملزموں کی تعداد اضافی ہو تو انہیں مجبورا تھانہ دینہ شفٹ کرنا پڑتا ہے،شہر کی آبادی میں دن بدن اضافہ ہوتا جا رہا ہے جبکہ پولیس چوکی سٹی دینہ میں ملازمین کی تعداد انتہائی کم ہے جو کہ موجودہ گشت کے نظام کے لیے موثر نہیں ہے۔

پولیس ملازمین دینہ کی کورٹ پیشی کی وجہ سے یہ تعداد مزید کمی کا شکار ہو جاتی ہے ،اگر شہر میں کوئی ایمرجنسی پیش آ جائے تو مجبورا دوسرے تھانوں سے نفری طلب کرنا پڑتی ہے جو کہ موجودہ حالات میں ذرا سی دیر بھی کسی بڑے نقصان کا پیش خیمہ بن سکتی ہے،پولیس چوکی سٹی دینہ کی عمارت ٹوٹل چار کمروں پر محیط ہے اور صحن میں اتنی جگہ نہیں کہ اگر کسی گاڑی کو پکڑا جائے تو اسے وہاں کھڑا کیا جا سکے مجبورا اسے بھی تھانہ دینہ شفٹ کرنا پڑتا ہے،پولیس چوکی سٹی دینہ سیکورٹی پوائنٹ سے مناسب جگہ پر موجود نہیں ہے۔

ضرورت اس امر کی ہے کہ پولیس چوکی سٹی دینہ کے لیے کشادہ عمارت کا بندوبست کیا جائے اور ملازمین خصوصا انسپکٹرز اور سب انسپکٹرز کی تعداد کو بڑھایا جائے ،گشت کے نظام کو موثر بنانے اور جرائم کی کمی کے لیے یہ اقدامات لازم ہو گئے ہیں۔

عوام الناس نے ڈی پی او جہلم عبدالغفار قیصرانی سے مطالبہ کیا ہے کہ سٹی چوکی دینہ کے مسائل پرخصوصی توجہ دی جائے اور ان کو جلد از جلد حل کرنے کے عملی اقدامات کیے جائیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button