دینہ

کوئی بھی عمل جو شریعت سے باہر ہو بندہ کو سیدھی راہ پر نہیں لے جا سکتا۔ امیر عبدالقدیر اعوان

دینہ: اللہ کا قرب حاصل کرنے کے لیے اعمال صالح میں اخلاص تب پیدا ہوتا ہے جب بندہ پوری محنت کے ساتھ اللہ اللہ کی تکرار کرتا ہے دنیاوی مصائب زندگی کا حصہ ہیں جب تک بندہ اس آب وگل میں زندہ ہے اس وقت تک اس کا امتحان ہوتا رہے گا۔

ان خیالات کا اظہار شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ امیر عبدالقدیر اعوان نے ایک اجتماع کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم معاشرے میں بہت سے کاموں کو نیکی سمجھتے ہوئے کر رہے ہوتے ہیں حالانکہ وہ بارگاہ الٰہی میں بے ادبی ہوتی ہے ،جیسے کہ آج کل گانے اور ساز کے ساتھ کلام پڑھے جاتے ہیں اور اسے تصوف کا نام دیا جاتا ہے یہ سرا سر گمراہی ہے ،ایسا کوئی بھی عمل جو شریعت سے باہر ہو بندہ کو سیدھی راہ پر نہیں لے جا سکتا ،اپنی عمومی زندگی سے ان رسومات اور رواجات کو ختم کرنا ہوگاجنہیں ہم دین سمجھ کر اپنائے ہوئے ہیں۔

یاد رہے حضرت مولانا امیر محمد اکرم اعوان رحمۃ اللہ علیہ کا وصال 7 دسمبر2017 کو ہوا ،آپ وقت کے عظیم صوفی ،مفسر قرآن،مترجم قرآن ،شاعر ،ادیب اور بہت سے حوالے ہیں آپ کے تعارف کے آخری سانس تک اپنے مشن پر کار بند رہے ،آپ کی حیات مبارکہ کے بہت سے پہلو ہیں جس کی مفصل تفصیل بشری اعجاز کی لکھی کتاب ” راہ نورد شوق” میں ہے۔

آپ نے اپنی زندگی میں قرآن کریم کی تین تفاسیر لکھی ان میں اکرم التفاسیر کا آخری پارہ آپکے دنیا سے پردہ فرما جانے کے بعد پرنٹ ہوا، اس حوالے سے اکرم التفاسیر کی تقریب رونمائی 4 مارچ 2018 بروز اتوار صبح 10:00 بجے دارالعرفان منارہ ضلع چکوال میں منعقد کی جا رہی ہے اس تقریب میں ملک کے طول و عرض کے علاوہ بیرون ممالک سے بھی خواتین و حضرات تشریف لائیں گے۔

اس تقریب میں حضرت جی رحمۃ اللہ علیہ کے جاں نشین شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ امیر عبدالقدیر اعوان خصوصی خطاب فرمائیں گے ،احباب کو اس با برکت پروگرام میں شرکت کی دعوت دی جاتی ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button