دینہ

ہمارے دور حکومت میں ہی ٹی ایچ کیو دینہ بھی بنے گا اور منگلا روڈ بھی بنے گی۔ راجہ یاور کمال

دینہ میں 75لاکھ کی لاگت سے تیار ڈسپنسری کا افتتاح کر دیا گیا ،افتتاح پارلیمانی سیکرٹری و ایم پی اے راجہ یاور کمال اور سی او ہیلتھ ڈاکٹر وسیم اقبال نے رِبن کاٹ کر کیا۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پارلیمانی سیکرٹری و ایم پی اے راجہ یاور کمال کاکہنا تھا کہ ہم سب سے پہلے مسلمان ہیں اور اس کے بعد سب سے پہلے پاکستانی ہیں ،آج کل جو ملک میں حالات پیدا کیئے جا رہے ہیں اور جو کہا جا رہا ہے کہ ووٹ کو عزت دو اور پھر افواج پاکستان کے خلاف تقریریں کی جا رہی ہیں ہمیں کسی بھی سیاسی جماعت کی وابستگی سے ہٹ کر سب سے پہلے پاکستان کے بارے میں سوچنا چاہیے اور ان سازشوں کی جو پاکستان کے خلاف ہو رہی ہیں ان کی باقاعدہ مذمت کرنی چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ مریم صاحبہ جلسے میں فرما رہی تھی کہ جب کسی بھی سابق وزیر اعظم یا سابقہ حکومت کے خلاف مقدمہ ہوتا ہے تو بھارت خو ش ہوتا ہے تو میں انھیں یہ بتانا چاہتا ہوں کے بھارت ان باتوں سے خوش نہیں ہوتا بھارت تب خوش ہوتا ہے جب آپ افواج پاکستان اور پاکستانی اداروں کے خلاف بیٹھ کر تقریریں کرتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بھارت تب خوش ہوتا ہے جب آپ بھارت جاتے ہیں تو آپ مودی سے تو ملتے ہیں مگر حریت رہنماؤں سے ملنے سے انکار کر دیتے ہیں بھارت اس بات پر خوش ہوتا ہے کہ مودی آپ کے گھر آتا ہے اور سالگرہ کا کیک کا ٹتا ہے۔

راجہ یاور کمال نے کہا کہ بار بار کہتے ہیں کہ ووٹ کو عزت دیں تو یہ جو دینہ شہر ہے یہاں 10سال آپ کی حکومت رہی ا ور ڈسپنسری میں کچرا پھینکا جاتا تھا، یہ ووٹ کی عزت تھی کہ منگلا روڈ کی تعمیر کے حوالے سے کچھ نہ کیا گیا،یہ ووٹ کی عزت تھی کہ آپ نے دینہ کے سب سے بڑے مسئلے ٹی ایچ کیو کے حوالے سے کچھ نہیں کیا ،اب اللہ کے فضل و کرم سے اسی دور میں ٹی ایچ کیو بھی بنے گا،منگلا روڈ بھی بنے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ70سال آپ سب نے مل کر اس ملک پر حکومت کی اور ملک غریب سے غریب اور آپ دنیا کہ امیر ترین خاندانوں میں شامل ہوتے گئے،اب آپ سب مل کر چاہتے ہیں کہ یہ ملک واپس آپ کو دیں تاکہ آپ رہی سہی کسر بھی نکال دیں۔

تقریب میں ڈاکٹر فضل الحق فضلی، میاں ہارون ،میاں ندیم ،حاجی راؤ عبدالرشید،نوید قریشی ،جمیل نظامی ،مہر عمران رشید،میاں عامر حیات ایڈوکیٹ ،راجہ شاہد عزیز کیانی ،راجہ وسیم ،راجہ سعود الطاف ،میاں نوید العصر، غازی امان اللہ خان ،حمید گل سمیت علاقہ بھرکی کثیر تعداد نے شرکت کی۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے راجہ یاور کمال کامزید کہنا تھا کہ عمران خان صاحب کو اللہ کی مہربانی سے اس قوم نے اس مقام پر بٹھایا ہے ، ہمیں 2سال ہوئے ہیں ابھی اور سب پارٹیوں کی گھبراہٹ یہ ہے کہ اگر عمران خان پانچ سال پورے کر گیا تو پھر ان کی گنجائش نہیں رہے گی اس ملک میں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم جانتے ہیں کہ مہنگائی ہے جب عمران خان نے ان چوروں پر ہاتھ ڈالا تو یہ سب اکھٹے ہو گئے اور انھوں نے ایک مصنوعی مہنگائی پیدا کی تاکہ اس حکومت کو بدنام کر سکیں ،ہماری پارٹی میں جب جہانگیر ترین کا نام آیا تو عمران خان نے ایک سیکنڈ کی بھی دیر نہیں لگائی اور جہانگیر ترین کو پارٹی سے فارغ کر دیا صرف اس وجہ سے کہ جو پچھلی حکومتوں میں ہو رہا تھا وہ بھی اس کا حصہ تھے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button