کالم و مضامین

حق مغفرت کرے عجب آزاد مرد تھا

تحریر: غضنفر علی اکرام

ہمارے بچپن میں ہمارا سب سے پسندیدہ ہفتہ وار ٹی وی پروگرام نیلام گھر ہوتا تھا جس کے میزبان طارق عزیز ہوتے تھے نیلا م گھر بچوں بڑوں میں بہت مقبول تھا جو ایک طرف لوگوں کو انعامات سے نوازتا تو دوسری طرف صاف ستھری فیملی تفریح مہیا کرتا طارق عزیز کی مَہَارتیں اور شرارتیں دل کو گدگدا دیتی تھیں۔

پروگرام کے دوراں سویّاں کھانے اور میوزیکل چیئر کے مقابلے بہت دلچسپ اور پر لطف لگتے موٹر سائیکل اور کار جیتنے کے کئی پروگرام ہوتے جن میں ذہنی آزمائش اور کرنٹ افیئرز کے سوالات بہت معلوماتی ہوتے پروگرام میں آج کے شوز کی طرح بات بات پر موٹر سائیکل نہیں بانٹی جاتی تھی بلکہ مقصدیت کے ساتھ یہ جیتنی پتی تھی۔

پروگرام میں طارق عزیز اجتماعی شعور کو پروان چڑھاتے تھے اور والدین کو یقین ہوتا تھا کہ ان کے بچوں میں اچھی عادات راسخ ہو رہی ہیں طارق عزیز پی ٹی وی کے بانیوں میں تھے اور اس قومی ٹی وی کے پہلے اناونسر اور پہلے پروڈیوسر تھے انہوں نے اگرچہ فلمی اداکاری بھی کی مگر ان کی وجہ شہرت نیلام گھر ہی رہا۔

طارق عزیز ایک دھنک رنگ شخصیت تھے وہ بے مثل یادداشت کے مالک تھے اور بے شمار نظمیں اور اشعار انھیں ازبر تھے اور خود بھی صاحب کتاب شاعر تھے سیاست میں بھی انہوں نے بھرپور حصہ لیا اور لاہور سے انہوں نے موجودہ وزیر اعظم عمران خان کو ہرا کر قومی اسمبلی میں قدم رنجہ فرمایا۔

طارق عزیز ایک سچے پاکستانی تھے پاکستان سے عشق کا اظہار وہ اپنے پروگرام کے آخر میں پاکستان ۔۔۔ زندہ باد کا بھرپور نعرہ لگا کر کرتے تھے طارق عزیز نے آخر عمر میں شادی کی اور انکی کوئی اولاد نہیں تھی انہوں نے قائد اعظم کی طرح اپنی ذاتی جائیداد کی وصیت کی ہے کہ وہ دولت پاکستان کو دے دی جائے یہ ان لیڈروں کے لئے مینارہ نور سے کم نہیں جنہوں نے اس ملک کے اثاثے اپنے بچوں میں تقسیم کر دیے۔

طارق عزیز اپنے وطن کو سب کچھ دے کر اپنے الله کے سامنے سرخرو ہو گئے وہ فخر سے کہہ سکیں گے کہ مالک جو تو نے دیا تیرے بندوں کے لئے دے آیا ہوں اب تو مجھ سے راضی ہو جا اور اللہ نے تو قرآن کریم میں خوشخبری دے دی ہے ایسے لوگوں کو کہ وہ ملول اور غمناک نہ ہوں گے اللہ کریم ان کی بخشش فرمائیں ان کی موت ایک زمانے ایک عہد کی موت ہے۔

ایسے لوگ خال خال پیدا ہوتے ہیں جنہوں نے ایک بامقصد زندگی بسر کی ہو وہ ایسے ہی تھے جئے تو عزت ،وقار اور غیرت کے ساتھ مرے تو خدمت کے ساتھ الله کریم انکی قبر کو اپنے نور سے بھر دے اور اپنے سایہ رحمت میں جنت نشیں فرمائیں ۔۔۔۔ آمین ثم آمین

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close