جہلم

گرمی بڑھتے ہی برف ڈیلروں کی چاندی، ڈیلروں اور دکانداروں نے من مانے نرخ مقرر کر لیے

جہلم: گرمی بڑھتے ہی برف ڈیلروں کی چاندی ڈیلروں اور دکان داروں نے من مانے نرخ مقرر کر لیے، شہری دن دیہاڑے نرخ مقرر نہ ہونے کے باعث لٹنے پر مجبور ہیں۔

تفصیلات کے مطابق شہر و گردونواح کے مختلف علاقوں، محمدی چوک، بلال ٹاؤن، مشین محلہ، کالا گجراں، جادہ چونگی، رہتاس روڈ، قبرستان چوک، شاندارچوک، سمیت برف فروخت کرنے والے دکانداروں نے من مانے نرخ مقرر کر کے عوام کی مشکلات میں اضافہ کر دیا ہے۔

دوسری جانب پرائس کنٹرول کمیٹیوں، پرائس مجسٹریٹوں نے چپ سادھ رکھی ہے۔گرمی کی شدت میں اضافے کے باعث بااثر برف فروخت کرنے والے دکانداروں نے اچانک برف کی مانگ میں اضافے کے ساتھ ہی نرخوں میں بھی خود ساختہ اضافہ کر دیا ہے۔

دکانداروں نے غریب اور سفید پوش طبقے سے تعلق رکھنے والے شہریوں کا مذاق اڑاتے ہوئے 20 سے 30 روپے کی برف فروخت کرنی چھوڑ دی ہے۔ بااثر برف فروش برف خریدنے کیلئے آنے والے گاہکوں کو 50 روپے میں 2 سے اڑھائی کلو برف تھما دیتے ہیں جس کی وجہ سے محنت مزدوری کرنے والے شہری اور ان کے چھوٹے چھوٹے معصوم بچے شدید گرمی کے موسم میں گرم پانی پینے پر مجبور ہیں۔

شہریوں نے انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ برف فروخت کرنے والوں کے لئے قانون بنایا جائے اور پنجاب کے دیگر اضلاع کی طرح شیشہ برف کے نرخ 10 روپے فی کلو مقرر کئے جائیں تاکہ عام شہری گرمیوں کے موسم میں ٹھنڈا پانی پی سکیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button