جہلم

شراب نوشی سے منع کرنے پر نشے میں دھت نوجوان کا مسیحی لڑکے اور اسکی والدہ پر تشدد

جہلم: محلہ غازی کالونی کے رہائشی شہزادمسیح ولد عاشق مسیح نے آئی جی پنجاب کو درخواست دیتے ہوئے موقف اختیار کیا ہے کہ 5 فروری بوقت شام ساڑھے 8 بجے اپنے گھر میں موجود تھا کہ گلی میں گھر کے سامنے شراب نوشی کرنے پر عدیل اعجاز ولد اعجاز رفیق سکنہ کالا گجراں کو منع کیا اس نے اپنے 2 نامعلوم ساتھیوں کے ہمراہ میری والدہ کو زدوکوب کیا۔

اسی اثناء میں شراب کے نشے میں دھت عدیل نامی نوجوان نے موبائل فون کے زریعے اپنے ساتھیوں کو ٹیلیفون کرکے ہمارے گھر بلایا جس پر 15/20 نامعلوم افراد جو ڈنڈوں سے لیس تھے ہمارے گھر چادر چار دیواری کا تقدس پامال کرتے ہوئے داخل ہوئے اور للکارا کہ آج کسی کو زندہ نہیں چھوڑیں گے ہم لوگوں نے اپنے کمروں کو اندر سے بند کرکے اپنی جان بچائی اور اسی وقت 15 پولیس ہیلپ لائن پر فون کیا لیکن پولیس مدد کو نہ پہنچ سکی۔

تحریری درخواست چوکی کالا گجراں گئے جہاں پولیس نے ہماری غربت کا مذاق اڑاتے ہوئے ہمیں برا بھلا کہنا شروع کر دیااور ڈرایا دھمکایا کہ اگر اب کسی سے واقعہ کا ذکر کیا تو اس کا خمیازہ تمہیں بھگتنا پڑے کا جس پر 16 فروری 2018 کو ڈی پی او دفتر میں قائم شکایت سیل میں تحریری درخواست جمع کروائی جس کا ڈائری نمبر 234CC/16.2.18 دیا گیا۔

عدیل اعجاز نامی شخص جو کہ بااثر ہونے کے ساتھ ساتھ لڑائی جھگڑوں ، دنگا فساد کرنے میں شہرت رکھتا ہے کہ خلاف آج تک کسی قسم کی کوئی قانونی کارروائی نہیں کی گئی ، جبکہ بااثر افراد ہمیں آئے روز سنگین نتائج کی دھمکیاں دے رہے ہیں ، اور ہمارے بچے سکولوں کالجوں میں جانے کی بجائے گھروں میں بیٹھے ہوئے ہیں۔

متاثرہ شخص نے آئی جی پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ مجھے او رمیرے گھر والوں کو تحفظ فراہم کیا جائے اور بااثر جرائم پیشہ عناصر کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے تاکہ بغیر کسی خوف کے معمولات زندگی جاری رکھ سکیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button