لاکھوں غریب ریٹائرڈ صنعتی کارکنوں بیواوں اور یتیموں کی پنشن بھی 11 ہزار روپے کی جائے، ملک نور حسین

0

کھیوڑہ: EOBIکے لاکھوں پنشنروں کی آوازبننے پر اللہ عمران خان کو سلامت رکھے وزیر اعظم نے ایوان اقتدار میں لاکھوں غریب ریٹائرڈ صنعتی کارکنوں بیواوں اور یتیموں کے لیے پنشن میں اضافہ کرنے کی آواز بلندکی اس سے پہلے جب آپ نے ہماری EOBI پنشن میں 20فیصد اضافہ کیا جو کہ فی الوقت اس شدید مہنگائی میں اونٹ کے منہ میں زیرہ کے برابر ہے مگر عمران خان نے وزیر اعظم کا اقتدار سنبھلتے ہی لاکھوں بزرگ ضعیف بوڑھوں بیواوں کا احساس کرتے ہوئے ہماری EOBIپنشن میں اضافہ کیا۔

ان خیالات کا اظہار ملک نور حسین چیئرمین EOBI پنشنرو ویلفیئر فاونڈیشن ضلع جہلم نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ سابقہ ن لیگی حکومت کے حکمرانوں کو سینکڑوں رجسٹرڈ لیٹر لکھے قومی اخبارات اور الیکٹرنک میڈیا پر پنشنروں کے مسائل اجاگر کیے ہم نے بیوہ عورتوں اور بچوں کے ہمراہ پنجاب اسمبلی کے سامنے نواز شریف حکومت کا ماتم کیا اور سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی کئی شہروں میں غائبانہ نماز جنازہ ادا کیا مگر افسوس کہ ان کے کانوں تک جوں تک نہ رینگی ہماری جدوجہد ریکارڈ پر ہے ہمارے پاس ماتم اور پر امن احتجاج کا مکمل ریکارڈ موجود ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے 2014 میں سپریم کورٹ میں پیش ہو کر اپنے ساتھ ہونے والے ظلمانہ سلوک سے عدالت عالیہ کو بھی آگاہ کیا ہمارے موقف اور حکومتی ظلم کو مدنظر رکھتے ہوئے سپریم کورٹ نے ہماری انسانی حقوق کی رٹ نمبر19731منظور فرمائی اور اٹارنی جنرل کو حکم دیا کہ حکومت پاکستان نے جب کم از کم چھ ہزار روپے ماہانہ پنشن کا سرکلر جولائی 2014 جاری کر دیا ہے تو حکومت نے لاکھوں غریب ریٹائرڈ صنعتی کارکنوں بیواوں اور یتیموں کی پنشن میں اضافہ کیوں نہیں کیا عدالت نے واضع الفاظ میں وضاحت کی کہ ہم ایسی شائین بائیں نہیں مانتے حکومت وقت کی ذمہ داری ہے کہ ان بیماروں لاچاروں بے بسوں کے انسانی حقوق کا خیال کرے اگر حکومت نے 3600سے 6000روپے پنشن نہ کی تو ہم اگلی تاریخ پر ماہانہ EOBIپنشن 6000ہزار روپے کر دیں گے۔

انہوں نے بتایا کہ اگلی تاریخ سے تین دن پہلے اسحاق ڈار نے پریس کانفرنس کر کے 5250روپے EOBIپنشن کر دی اور بتایا کہ نواز شریف لندن میں بستر مرگ پر ہے میں نے ان سے منظوری لے کر ای او بی آئی پنشن بڑھا دی ہے سپریم کورٹ میں 15کو ای او بی آئی کے وکیل نے عدالت میں بیان دیا کہ EOBIکے ادارے کے پاس اس وقت پنشن بڑھانے کا بجٹ نہیں ہے ہم اگلے سال بجٹ کے موقع پر پنشن بڑھا دیں گے EOBIکے افسران نے اگلے بجٹ میں پنشن نہ بڑھائی 19مئی 2015کو سپریم کورٹ میں دوبارہ کیس شروع ہوا جو موجودہ وقت تک چل رہا ہے اس دوران سابقہ حکومت نے سرکاری ریٹائرڈ ملازمین کی کم سے کم پنشن 3جولائی 2018کو دس ہزار روپے کی اور موجودہ حکومت نے کم سے کم پنشن گیارہ ہزار کر دی جس پر ہم نے آپ کی حکومت قائم ہونے پر اپنے ساتھ سابقہ حکومت کا ظلم میڈیا کے ذریعہ اجاگر کیا مگر موجودہ پی ٹی آئی کی حکومت نے بھی ہمارے ساتھ انصاف نہیں کیا۔

انہوں نے کہا کہ ہم وزیر اعظم عمران خان وفاقی وزیر زلفی بخاری سے بھر پور مطالبہ کرتے ہیں کہ ہم غریب محنت کش لاکھوں غریب ریٹائرڈ صنعتی کارکنوں بیواوں اور یتیموں کی پنشن بھی 11000روپے کی جائے ہم مزدور طبقہ تاحیات دعا گو رہیں گے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.