پنڈدادنخاناہم خبریں

پنڈدادنخان کا علاقہ تھل محکمہ پبلک ہیلتھ کی نااہلی کے باعث کربلا کا منظر پیش کرنے لگا

پنڈدادنخان: پنڈدادنخان کا علاقہ تھل محکمہ پبلک ہیلتھ کی نا اہلی کے باعث کر بلا کا منظر پیش کرنے لگا، پبلک ہیلتھ کی غفلت لاپرواہی کی وجہ سے پنڈ دادنخان کے نواحی گاؤں گول پور،کوڑا، چوران،ڈھوک ونیس میں لوگ شدید گرمی میں پینے والے پانی کی بوند بوند کو ترسنے لگے، چاروں گاؤں میں سات سے آٹھ دن بعد چند منٹ کے لیے پانی سپلائی کیا جاتا ہے، علاقہ تھل کے عوام عملی تبدیلی کی منتظر ، ایم این اے وفاقی وزیر فواد حسین چوہدری خود متاثر گاؤں کا دورہ کریں۔ عوامی سماجی حلقوں کا مطالبہ
تفصیلات کے مطابق پنڈدادنخان کے علاقہ تھل کے گاؤں گول پور،کوڑا ،چوران،ڈھوک وینس میں محکمہ پبلک ہیلتھ کی نا اہلی کی وجہ سے پانی کی شدید قلت ہزاروں لوگ پینے والے پانی کی بوند بوند کو ترس رہے ہیں لیکن محکمہ پبلک ہیلتھ کی غفلت لاپرواہی کی انتہا ہے کہ چاروں گاؤں میںسات سے آٹھ دن بعد صرف تیس سے چالیس منٹ پانی کی سپلائی دی جاتی ہے۔
مصدقہ ذرائع کے مطابق یوزر کمیٹی والے چاروں گاؤں کے تقریبا 1300افراد سے تین ماہ بعد 450 روپئے وصول کر تے ہیں پانی آئے یا نہ آئے ۔ایک سال قبل بھی ماہ رمضان میں ہزاروں لوگوں نے پر امن احتجاج کیا تھا اور افسران نے ان پر ایف آئی آر درج کروا دی تھی۔لیکن پانی کا مسلہ ابھی بھی سنگین ہے اور سورج آگ برسا رہا ہے جبکہ گاؤں کے مرد و زن پینے والے پانی کے لیے دربدر کی ٹھوکریں کھا رہیں جن کا کوئی پرسان حال نہیں ہے۔
علاقہ تھل کے عوام عملی تبدیلی کی منتظر علاقہ تھل میں پینے کے صاف پانی کا مسلہ کئی دہا ئیوںسے چلا آرہا ہے منتخب نمائندے دعووں سے ہٹ کر عملی طور پر اقدامات اختیار کریں تاکہ علاقہ تھل کے عوام پینے کے صاف پانی کی بنیادی سہولت سے مستفید ہوسکیں۔
عوامی سماجی حلقوں نے وفاقی وزیر فواد حسین چوہدری ایم این اے NA67 سے مطالبہ کیا ہے کہ فوری طور پر اپنی مصرو فیات سے وقت نکال کر ان گاؤں کا دورہ کریں اور دیکھیں کہ ان کے حلقے کے افراد کتنی مشکلات میں مبتلا ہیں اور غفلت میں ملوث افراد کے خلاف محکمانہ کارروائی کر کے پانی کے مسئلہ کو فوری حل کیا جائے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button