جہلم

جہلم شہر کے داخلی و خارجی راستے پولیس ناکوں سے محروم

جہلم: شہر کے داخلی و خارجی راستے پولیس ناکوں سے محروم ،بغیر چیکنگ کے اندرون شہر کوئی بھی ناخوشگوار واقع رونما ہو سکتا ہے ،سکیورٹی کی موجودہ صورتحال کے تناظر میں داخلی و خارجی راستوں کی سکیورٹی سوالیہ نشان بن کر رہ گئی۔

لاہور، پشاور ، راولپنڈی ، میر پور ، آزاد کشمیر سے آنے والے راستے جادہ چوک ، جنرل بس اسٹینڈ، چھاونی چوک ، مجاہدآباد سمیت مختلف مقامات سے داخل ہو کر شہر کی جانب جانا ہوتا ہے ۔ راولپنڈی اور دیگر شہروں سے آنے والی ٹریفک کو چیک کر نے کے لئے کسی قسم کا کوئی ناکہ موجود نہیں اور نہ ہی اندرون شہر آنے والی بھاری گاڑیوں کی چیکنگ کا کوئی نظام موجود ہے ۔

جادہ چوک کراس کرنے کے بعد ایک روڈ ضلع کچہری کی طرف جاتی ہے جس پر سرکاری و نجی تعلیمی اداروں کی بہتات ہے جبکہ شاندار چوک کی جانب جانے والی سڑک پر بڑی بڑی مارکیٹیں اور پلازے موجود ہیں۔شاندار چوک جو شہر کے عین وسط میں واقع ہے سے چاروں اطراف سٹرکیں نکلتی ہیں ۔ بد قسمتی سے شہر میں بھی گاڑیوں کی چیکنگ کا کوئی نظام موجود نہیں جس کی وجہ سے تمام اہم مقامات تک با آسانی رسائی ممکن ہے ،یہاں سے آنے والی ٹریفک شہر اور چھاؤنی چوک کے کسی بھی علاقے میں داخل ہو سکتی ہے۔

اسی طرح شاندار چوک کے بعد جی ٹی ایس چوک واقع ہے جہاں بھی بدقسمتی سے کوئی قانون نافذ کرنے والے اداروں کا اہلکار موجو دنہیں ،جی ٹی ایس چوک سے ایک سڑک ریلوے پل کی جانب اور دوسری سڑک ریلوے اسٹیشن کی طرف جاتی ہے جبکہ ایک سڑک جہلم چھاونی چوک کی طرف نکلتی ہے 2 برس قبل تک جی پی او چوک میں پولیس ناکہ موجود ہوتا تھا جسے نامعلوم وجوہات کی بناء پر ختم کر دیا گیاہے ۔ اسی طرح جادہ چوک کے مقام پر بوقت ضرورت پولیس نفری کو تعینات کیا جاتا ہے عام حالات میں شہر کے داخلی و خارجی راستے کھلے رہتے ہیں جس کی وجہ سے موجودہ حالات میں کسی وقت بھی کوئی بڑا سانحہ رونما ہونے کا خدشہ ہے ۔

حکومت پنجاب کی جانب سے شہر کے داخلی و خارجی راستوں پر انتظامیہ نے شہر کے اندر بھاری گاڑیوں کے داخلے پر پابندی کے بورڈ آویزاں کر رکھے ہیں ۔ جسے سارا دن پڑھنے کے بعد بھاری گاڑیوں کے ڈرائیور شہر کی سڑکوں پر دندناتے نظر آتے ہیں ۔ جنہیں چیک کرنے کا کوئی انتظام موجود نہیں ۔ جس کی وجہ سے شہری اپنے آپ کو غیر محفوظ محسوس کرتے ہیں ۔ ٹریفک پولیس کے افسران دفتروں تک محدود ہو کر رہ گئے ہیں ڈی ایس پی ٹریفک نے دفتر سے باہر نکلنے کی اور ماتحت عملے کو بھاری گاڑیاں چیک کرنے کی کبھی ضرورت محسوس نہیں کی۔ جس کیوجہ سے بھاری گاڑیاں 24 گھنٹے شہر کی سڑکوں پر موت کا رقص جاری رکھے ہوئے ہیں۔

شہریوں نے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر جہلم سے مطالبہ کیا ہے کہ موجود حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے شہر کے داخلی و خارجی راستوں پر پولیس نفری کو تعینات کیا جائے تاکہ شہری اپنے آپ کو محفوظ تصور کریں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button