جہلم

سرائے عالمگیر سرکاری افسران نے اے سی کے نام پر تاجروں کو ہراساں کرنا شروع کر دیا

جہلم: سرائے عالمگیر سرکاری افسران نے اے سی کے نام پر تاجروں کو ہراساں کرنا شروع کر دیا، نائب تحصیلدار، ہیڈ کلرک او ر عملہ دوکانوں پر چھاپے مارنے لگا، حساب کتاب چیک کروانے کا مطالبہ، انکار پر تاجروں کوسنگین نتائج کی دھمکیاں ، تاجروں کا اعلی حکام سے نوٹس کا مطالبہ۔
تفصیلات کے مطابق وفاقی حکومت کی جانب سے کاروبار میں آسانیاں پیدا کرنے کی ہدایت کے باوجود سرائے عالمگیر میں اے سی سرائے عالمگیر کے نام پر تاجروں کو ہراساں کیا جارہا ہے۔
اس حوالے سے اقبال غلہ منڈی کے تاجر نے بتایا کہ نائب تحصیلدار ، ہیڈ کلرک اور عملہ پر مشتمل چند سرکاری افسران نے منڈی میں آ کر تاجروں کا لین دین کا ریکارڈ چیک کرنا شروع کردیا جب اس حوالے سے کسی سرکاری آرڈر ، نوٹیفیکیشن بارے تاجروں نے استفسار کیا تو افسران سیخ پا ہو گئے اور دکانداروں کو سنگین نتائج اور چالان کی دھمکیاں دینے لگے۔
تاجروں کا کہنا ہے کہ ہم باقاعدگی سے ٹیکس جمع کرواتے ہیں اور ہمارے سارے سال کا لین دین کار یکارڈ اور ٹیکس ریٹرن ایف بی آر کے پاس موجود ہے پھر کس قانون کے تحت نائب تحصیلدار اور عملہ اے سی سرائے عالمگیر کا نام لے کر ریکارڈ اور کھاتے چیک کر رہا ہے ہم ایسے زور زبردستی کو ہر گز نہیں مانتے۔
اگر اس حوالے سے کوئی حکم اعلی حکام نے جاری کیاہے تو تمام تاجر تنظیموں کوباقاعدہ نوٹیفیکیشن دکھایا جائے ، سرکاری آرڈر کی کاپی کے بغیر کسی کو کھاتے چیک نہیں کروائیں گے۔تاجروں نے وزیر اعلی پنجاب اور ایف بی آر کے حکام سے فوری نوٹس کا مطالبہ کیا ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button