پنڈدادنخان

بااثر ڈیلرز کی جانب سے سائبان نامی زرعی ادویات کی فروخت، درجنوں کسانوں کی فصلیں تباہ ہو گئیں

جہلم: اسسٹنٹ ڈائریکٹر آف ایگریکلچرزپلانٹ پروٹیکشن پیسٹ وارننگ اینڈ کوالٹی کنٹرول آف پیسٹی کی سرپرستی میں درجنوں کسانوں کی فصلیں تباہ ہو گئیں ، کسان محکمہ زراعت کے ضلعی افسران کے خلاف سراپا احتجاج ،ارباب اختیار سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق اسسٹنٹ ڈائریکٹر محکمہ زراعت پیسٹ وارننگ اینڈ کوالٹی کنٹرول کی سرپرستی کی وجہ سے تحصیل پنڈدادنخان میں بااثر ڈیلرز نے سائبان نامی زرعی ادویات کی فروخت شروع کر رکھی ہے ، جس کے استعمال سے تحصیل پنڈدارنخان کے علاقہ جلالپور شریف، پنڈی سید پور، پنن وال، ہرن پورکے درجنوں کسانوں کی فصلیں تباہ و برباد ہو چکی ہیں۔

ڈیلرز نے اپنا ٹارگٹ پورا کرنے کے لئے زرعی ادویات کی کمپنی سائبان کی دوائی غلط طریقے سے استعمال کروائی جس کے نتیجے میں تحصیل پنڈدادنخان کے سینکڑوں کسانوں کو گندم کی فصل کا لاکھوں کروڑوں میں نقصان ہو چکاہے ، جبکہ محکمہ زراعت محکمہ پیسٹ وارننگ اینڈ کوالٹی کنٹرول کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر سب کچھ جاننے کے باوجود خاموش تماشائی کا کردار ادا کررہے ہیں۔

کسانوں کا کہنا ہے کہ اسسٹنٹ ڈائریکٹر کو تحریری و زبانی طور پر اگاہ کر چکے ہیں لیکن متعلقہ افسر کے کانوں پرجوں تک نہیں رینگی ، جبکہ متعلقہ محکمہ کی سرپرستی میں بااثر ڈیلرز 2نمبر زرعی ادویات دیدہ دلیری کے ساتھ فروخت کر رہے ہیں۔

کسانوں نے احتجاج کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب،چیف سیکرٹری پنجاب سے مطالبہ کیاہے کہ ضلع جہلم میں محکمہ زراعت پیسٹ وارننگ اینڈ کوالٹی کنٹرول کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر سمیت ماتحت عملے کو ضلع بدر کیا جائے اور جعلی ادویات فروخت کرنے والے بااثر ڈیلرز سے کسانوں کی فصلیں تباہ کرنے پر نقصان کا اذالہ کروایا جائے۔

موقف جاننے کے لئے اسسٹنٹ ڈائریکٹر محکمہ زراعت پیسٹ وارننگ اینڈ کوالٹی کنٹرول سے رابطہ قائم کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ ڈیلرز کے سیمپل لے کر لیبارٹری میں بھجوا دیئے ہیں رپورٹ آنے کے بعد ڈیلرز کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

دوسری جانب کسانوں کا کہنا ہے کہ رپورٹ آنے تک گندم کا سیزن ختم ہو جائیگااس طرح اسسٹنٹ ڈائریکٹر جان بوجھ کر معاملے کو طول دینا چاہتا ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button