لیڈی ہیلتھ ورکرز کے پانچ سالہ بقایات کو حکومت بھول گئی

0

پڑی درویزہ: لیڈی ہیلتھ ورکرز کے پانچ سالہ بقایات کو حکومت بھول گئی ۔ 2012ء کو عدالت عظمیٰ پاکستان کے ایک فیصلے کے مطابق نیشنل پروگرام برائے خاندانی منصوبہ بندی و بنیادی صحت کی ملازمین (لیڈی ہیلتھ ورکرز) کو مستقل کیا گیا تھا ۔ بقایاجات تا حال ادا نہیں ہو سکے ۔ وفاقی وزیر صحت سے نوٹس لینے کامطالبہ ۔

تفصیلات کے مطابق سابق چیف جسٹس آف پاکستان افتخار محمد چوہدری نے اپنے ایک فیصلے میں 2012ء سے لیڈی ہیلتھ ورکرز کو مستقل کرنے کا حکم صادر فرمایا تھا جس پر گزشتہ سال بھر سے عمل تو شروع ہو گیا ہے لیکن 2012ء سے تا حال بقایاجات ادا نہیں کیے جارہے ہیں ۔

صورت حال کے پیش نظر لیڈی ہیلتھ ورکرز اور متعلقہ دیگر ملازمین کی بڑی تعداد نے ایک مشترکہ بیان میں وفاقی وزیر صحت پاکستان نے مطالبہ کیا ہے مطلوبہ بقایات کی ادائیگی کے جلد از جلد انتظامات کیے جائیں تا کہ ان معصوم ملازمین کا طویل انتظار ختم ہو سکے ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.