جہلماہم خبریں

جہلم میں بااثر رئیس زادے نے شادی شدہ ملازمہ کو گن پوائنٹ پر جنسی درندگی کا نشانہ بنا ڈالا

جہلم: رمضان المبارک کا تقدس پامال، چک عیسیٰ میں بااثر رئیس زادے نے مال مویشیوؤں کے ڈیرے پر کام کرنے والی شادی شدہ ملازمہ کو گن پوائنٹ پر جنسی درندگی کا نشانہ بنا ڈالا،ابتدائی میڈیکل رپورٹ کے بعد تھانہ صدر میں مقدمہ درج، جنسی بھیڑیا فرار، پولیس کے گرفتاری کے لیے چھاپے،غریب محنت کش فیملی پر صلح کے لیے بااثر افراد کا دباؤ،صلح کے بدلے لاکھوں کی پیشکش۔
رپورٹ کے مطابق جہلم کے علاقہ چک عیسیٰ میں اپنی فیملی کے ساتھ رہائش پذیر (ن)بی بی نے پولیس کو بتایا کہ اسکاخاوند ملک جہانگیر کے ڈیرے پر کام کرتا ہے جبکہ سائلہ چوہدری اسد کے گھر کام کرتی ہے، چوہدری اسد فیملی کے ساتھ گھر سے باہر گیا ہوا تھا۔ چوہدری اسد کی والدہ نے کہا کہ گھر کے لیے دودھ لے جانا۔
متاثرہ خاتون نے بتایا میں ساڑھے چار بجے کے قریب دودھ لینے کے لیے چوہدری اسد کی حویلی پہنچی تو ساتھ والی حویلی جہاں چوہدری اسد کے مال مویشی ہوتے ہیں جنکی دیکھ بھال نعمان عرف نومی گجر ولد طارق کرتا ہے،مجھے اکیلا دیکھ کر نعمان عرف نومی گجر دیوار پھلانگ کر اندر آگیا اور گن پوائنٹ پر مال مویشیوں والے کمرے میں لے گیا کھینچا تانی میں میری کپڑے بھی پھٹ گئے، نعمان نے پستول تان لیا اور میرے ساتھ زبردستی حرام کاری شروع کر دی، میرا خاوند ڈھونڈتا ہوا حویلی آگیا جبکہ ملزم نعمان پستول لہراتا ہوا فرار ہو گیا۔
تھانہ صدر پولیس نے موقع سے شواہد اکھٹے کر لیے ہیں ابتدائی میڈیکل میں خاتون سے زیادتی کی تصدیق ہو گئی ہے جس پر پولیس نے مقدمہ درج کر کے ملزم کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارنا شروع کر دئیے ہیں۔
دوسری طرف ماہ مقدس میں حرام کاری کرنے والے ملزم کو بچانے کے لیے اس کی برادری کے چند سفید پوش متحرک ہو گئے ہیں اور متاثرہ خاتون کو لاکھوں روپے کی آفریں کی جا رہی ہیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button