دینہ

شدید حبس اور گرمی کی وجہ سے ہیٹ اسٹروک اور ڈی ہائیڈریشن کی بیماریاں عام ہو رہی ہیں۔ ڈاکٹر سید شبیر اختر شاہ

دینہ: حالیہ شدید حبس اور گرمی کی وجہ سے ہیٹ اسٹروک اور ڈی ہائیڈریشن کی بیماریاں عام ہو رہی ہیں ایسے حالات میں زیادہ نمک اور لیمو والا پانی استعمال کریں، بازاری اشیاء چکنائی اور مرچ مصالحے والی اشیاء سے پرہیز کریں، دھوپ میں کم سے کم نکلیں خصوصی طور پر بوڑھے اور بچوں کو دھوپ سے بچائیں، ہیٹ اسٹروک کی اگر بر وقت تشخیص نہ ہو تو موت بھی واقع ہو سکتی ہے لہذا مجبوری میں دھوپ میں جانے سے پہلے اپنے سر اور گردن کو اچھی طرح ڈھانپ لینا چاہیے ۔

ان خیالات کا اظہار معروف سرجن ڈاکٹر سید شبیر اختر شاہ نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ بازاری مصالحے دار اور چکنائی والی اشیاء کھانے سے پرہیز کریں جو صحت کے لئے سخت نقصان دے ہیں ، سن سٹروک کو ہم بیماری کا نام نہیں دے سکتے بلکہ یہ انسانی دماغ کی ایک کیفیت کا نام ہے جس میں انسان کے دماغ میں موجود انسانی جسم کے ٹمپریچر کو کنٹرول کرنے والا سسٹم فیل ہو جا تا ہے اور انسان کا جسم باہری درجہ حرارت کنٹرول نہ ہونے کی وجہ سے کام چھوڑ دیتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سن سٹروک سے انسانی جسم کے اہم اعضاء کام کرنا چھوڑ دیتے ہیں اور موت واقع ہوسکتی ہے لیکن اگر بروقت تدابیر کی جائیں تو آپ خود کو اور اپنے گھر والوں کو محفوظ رکھ سکتے ہیں ،مریض کو بروقت ٹھنڈی جگہ لے جائیں اور پانی کا استعمال زیادہ سے زیادہ کریں تاکہ مریض کو بچایا جا سکے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button