پنڈدادنخاناہم خبریں

ڈنڈوت فیکٹری کے مزدورں کی مشکلات میں مزید اضافہ، 277 مزدورں کی برطرفی کا فیصلہ درست قرار

پنڈدادنخان: ڈنڈوت سیمنٹ فیکٹری کے سینکڑوں مزدوروں کی مشکلات حل نہ ہوسکیں، مزدورں کی مشکلات میں مزید، اضافہ 277 مزدورں کی برطرفی کا فیصلہ درست قرار، مزدورں کی برطرفی پر مالکان نے لیبر کورٹ میں درخواست دائر کی ہوئی تھی جبکہ مزدور یونین نے مقامی عدالت سے حکم امتناعی حاصل کر رکھا ہے، فیکٹری مالکان بیس بیس سالوں سے ریٹائرڈ ملازمین کے واجبات ادا کرنے سے بھی قاصر۔

تفصیلات کے مطابق خسارے کی بنا پر دو سال قبل بند کی گئی ڈنڈوت سیمنٹ فیکٹری کے مزدورں کی مشکلات میں مزید اضافہ ہو گیا، 277 مزدورں کی برطرفی کا فیصلہ درست قرار دے دیا گیا، تقریبا دو سال قبل ڈنڈوٹ سیمنٹ فیکٹری کی انتظامیہ نے 277 مزدور کو جبری طور پر ملازمت سے فارغ کر دیا تھا۔

ڈنڈوت سیمنٹ فیکٹری مالکان نے لیبر کورٹ میں درخواست دائر کر رکھی تھی کہ فیکٹری مسلسل خسارے میں چل رہی ہے اور پرانی مشینری کے ساتھ اتنے مزدوروں کے ساتھ کام ممکن نہیں فیکٹری کی توسیع ضروری ہے اتنے مزدوروں کے ساتھ فیکٹری چلانا ممکن نہیں جس پر گزشتہ روز فیصلہ سنایا گیا جس میں مالکان کی طرف سے مزدورں کی برطرفی کو درست قرار دیا گیا ہے جبکہ مزدور یونین نے مزدوروں کی برطرفی کے خلاف مقامی عدالت سے حکم امتناعی حاصل کر رکھا ہے۔

ڈنڈوت سیمنٹ فیکٹری پچھلے دو سالوں سے بند ہے مزدوروں نے متعدد بار پر امن طور پر احتجاج بھی کئے اور ہزاروں مزدور بے روزگار ہو چکے ہیں مزدوروں یونین پچھلے دو سالوں سے سراپا احتجاج ہے مگر فیکٹری مالکان بیس بیس سالوں سے ریٹایرڈ ملازمین کے واجبات ادا کرنے سے بھی قاصر ہیں جبکہ فیکٹری سے وابستہ مزدور کافی عرصہ فاقہ کشی کا شکار ہیں یہاں تک کے انکے بچوں کو فیسوں کی ادائیگی نہ ہونے کی وجہ سے سکولوں سے بھی نکال دیا گیا ہے جس کی وجہ سے بچوں کا مستقبل بھی متاثر ہورہا ہے۔

عوامی سماجی و مزدور حلقوں نے حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ مزدوروں کے ساتھ ہونے والے ظلم کو روکا جائے اور ڈنڈوٹ سیمنٹ فیکٹری کو فوری طور پر چلایا جائے فیکٹری سے ریٹا ئرڈ ملازمین کے واجبات ادا کیے جائیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button