مہنگائی کا جن بے قابو، چیک اینڈ بیلنس نہ ہونے کی وجہ سے عوام شدید پریشان

0

جہلم: شہر و گردونواح میں مہنگائی کا جن بے قابو،چیک اینڈ بیلنس نہ ہونے کی وجہ سے عوام شدید پریشان،دکا نداروں نے من مانے نرخ مقرر کر کے غریب عوام کی چمڑی ادھیڑنا شروع کر دی،سبزی فروٹ و دیگر اشیاء خوردونوش عام آدمی کی پہنچ سے دور ہونے لگیں، ڈپٹی کمشنر سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق جہلم شہر و گردونواح کے دکانداروں نے بجٹ منظور ہونے سے قبل ہی من مرضی کے نرخ مقرر کر رکھے ہیں،سبزی، فروٹ، و دیگر اشیاء خوردونوش بغیر نرخ ناموں کے فروخت کی جارہی ہیں۔سبزی،فروٹ،دالیں،گوشت کی قیمتیں آسمان سے باتیں کر رہی ہیں اوربے بس شہری خود ساختہ مہنگائی کے ہاتھوں پس کر رہ گئے ہیں۔

جب کوئی گاہک دکاندار سے کسی شے کی قیمت معلوم کر کے نرخ کم کرنے کا مطالبہ کر تا ہے توبااثردکاندار سیخ پا ہو جاتے ہیں اور گاہکوں کے ساتھ بدتمیزی کرنا شروع کر دیتے ہیں جس کی بنیادی وجہ دکانداروں کے پاس نرخ ناموں کا نہ ہونا ہے، خریدار مجبوراً مہنگے داموں اشیاء خوردونوش خریدنے پر مجبور ہو جاتے ہیں۔

شہریوں کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ حکومت نے ابھی بجٹ منظور ہی نہیں کیا جبکہ ضلع جہلم کے دکانداروں نے قومی اسمبلی میں پیش ہونے والے بجٹ پر عملدرآمد شروع کررکھا ہے ، جبکہ کہ ابھی بجٹ ایوان میں منظور ہی نہیں کیا یوں محسوس ہوتا ہے کہ ضلع جہلم میں جنگل کا قانون نافذ ہے ،پرائس کنٹرول مجسٹریٹس دکانداروں کو چیک کرنے کی بجائے ٹھنڈے کمروں میں بیٹھ کر سب اچھا ہے کہ راگ آلاپ رہے ہیں ۔

شہریوں نے ڈپٹی کمشنرجہلم سے گراں فروشوں کے خلاف قانونی کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.