جہلم

انسداد تجاوزات آپریشن کے باوجود مسئلہ حل نہ ہوسکا، جہلم میں پھر تجاوزات قائم

جہلم: انسداد تجاوزات آپریشن کے باوجود مسئلہ حل نہ ہوسکا، میونسپل عملہ کے بازار داخلے کے ساتھ ہی تمام عارضی تجاوزات غائب، عملہ کے جاتے ہی دس دس فٹ سڑکوںپر پھر تجاوزات قائم، آپریشن سے قبل تجاوزات کی خفیہ ریکارڈنگ کرکے ذمہ دار ان کے خلاف بھاری جرمانے کیئے جائیں تو بہتری آسکتی ہے۔ شہریو ںکی تجویز

ڈی سی جہلم کے حکم پر ہفتہ انسداد تجاوزات کے دوران بھی تجاوزات کا مسئلہ حل نہیں ہوسکا ہے اورمیونسپل کارپوریشن کے عملہ کے دفتر سے روانہ ہوتے ہی تمام دوکاندار اپنا سامان اندر رکھ لیتے ہیں اور جیسے ہی عملہ دوسرے بازار میں داخل ہو تا ہے دس دس فٹ سڑکیں پھر تجاوزات کی زد میں آجاتی ہیں۔

مین بازار، نیا بازار اور چو ک اہلحدیث میں یہ سلسلہ بھر پور عروج پر ہے جہاں ہر دوکاندار ایک دوسرے سے بڑھ کر سڑک پر قبضہ کئے ہوئے ہے۔

شہریوں کاکہنا ہے کہ عملہ کے آنے پر تو تجاوزات ختم ہو جاتی ہیں لیکن اگر انتظامیہ آپریشن سے قبل سادہ کپڑوں میں ملبوس ملازمین کے ذریعے بازار کی تمام تجاوزات کی ریکارڈنگ کر لے اور آپریشن کے وقت ان دوکانداروں کو بھاری جرمانے کئے جائیں تو کچھ بہتری آسکتی ہے کیونکہ کچھ ملازمین آپریشن سے قبل دوکانداروں کو باقاعدہ اطلاع کر دیتے ہیں جس کی وجہ سے تجاوزات کا خاتمہ ممکن نہیں ہوتا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button