جہلم

محکمہ بلڈنگ ایم اینڈ آر کے دفتر میں نصف درجن سے زائد گھوسٹ ملازمین کو پچھلے کئی ماہ سے تنخواہوں کی ادائیگیاں جاری

جہلم: ضلع کچہری میں واقع محکمہ بلڈنگ ایم اینڈ آر کے دفتر میں نصف درجن سے زائد گھوسٹ ملازمین کو پچھلے کئی ماہ سے تنخواہوں کی ادائیگیاں جاری ،قومی خزانے کو ماہانہ لاکھوں کا نقصان، وزیر اعلیٰ پنجاب، چیف سیکرٹری پنجاب ، ڈی جی اینٹی کرپشن سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق ضلع کچہری میں قائم محکمہ بلڈنگ ایم اینڈ آر کے دفتر میں نصب درجن سے زائد گھوسٹ ملازمین ہر ماہ کے اختتام پر دفتر میں موجود حاضری رجسٹر پر اپنی حاضریاں لگا کر ہر ماہ کی یکم تاریخ کو تنخواہیں وصول کر لیتے ہیں۔

قابل زکر بات یہ ہے کہ محکمہ بلڈنگ ایم اینڈ آر جہلم میں تعینات ایکسین ، اکاؤنٹنٹ، ایس ڈی او ، سب انجینئر، پلمبر، قلی ، کارپینٹراور ڈرائیور شامل ہیں ان میں ایسے ملازمین بھی شامل ہیں جو تعیناتی کے وقت صرف ایک مرتبہ ڈیوٹی رپورٹ کرنے کے لئے جہلم آئے اور دوبارہ دفتر آنے کی ضرورت محسوس نہیں کی ، اس طرح اکثر و بیش تر ملازمین ہر ماہ قومی خزانے سے لاکھوں روپے اینٹھ رہے ہیں۔

محکمہ بلڈنگ ایم اینڈ آر میں متعدد ایسے ملازمین بھی شامل ہیں جو محکمہ ایم اینڈ آر میں ملازم ہونے کے ساتھ ساتھ اپنے پرائیویٹ کارروبار کر رہے ہیں۔

یہاں یہ امر قابل زکر ہے کہ عمران نامی ڈرائیور کا نام حاضری رجسٹر میں سرے سے موجود ہی نہیں اس طرح محکمہ کے افسران اور ماتحت عملہ ایک دوسرے کی پشت پناہی میں مصروف ہے ، اسجد نامی پلمبر جو 18 ماہ سے ڈیوٹی سے غائب ہے کی گزشتہ ماہ تنخواہ بند ہوئی تو اہلکار نے ہاتھ پاؤں مارنے شروع کر دیئے۔

موقف جاننے کے لئے ڈپٹی کمشنر راؤ پرویز اختر سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ گھوسٹ ملازمین اگر ثابت ہوئے تو ایسے ملازمین کے خلاف سخت محکمانہ کارروائی عمل میں لائی جائے گی اور کسی قسم کی نرمی نہیں برتی جائے گی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button