جہلم

ضلع جہلم میں بڑے بڑے ذخیرہ اندوز مگرمچھ حکومت اور ضلعی انتظامیہ کی پہنچ سے کوسوں میل دور

جہلم: شہر سمیت ضلع بھر میں بڑے بڑے ذخیرہ اندوز مگر مچھ حکومت اور ضلعی انتظامیہ کی پہنچ سے کوسوں میل دور، ذرائع نے بڑے پیمانے پر چینی ، بناسپتی گھی کوکنگ آئل ،دالیں، چاول اور دیگر روز مرہ کی اشیائے ضروریہ گوداموں میں سٹاک کئے جانے کا انکشاف کیا ہے۔

ذخیرہ اندوزی میں غلہ منڈیوں کے آڑھتی اور کریانہ سٹوروں کے بااثر تاجر بھی شامل ،جوکہ بھاری سٹاک اور مصنوعی مہنگائی کر کے حکومت اور ضلعی انتظامیہ کی کارکردگی کو نقصان پہنچانے میں مصروف ہیں ، گرانفروشی کے مرتکب تاجرحکومت اور انتظامیہ کو مہنگائی کا ذمہ دار ٹھہرا کر بد نام کرنے کی کوششیں کر رہے ہیں۔

حکومت کی ہدایت پر ضلعی انتظامیہ نے منافع خور ذخیرہ اندوزوں کے خلاف کریک ڈاؤن کرنے کی بجائے مصلحت اختیار کر رکھی ہے جس کیوجہ سے بڑے بڑے مگر مچھ آزاد اور انتظامیہ کی پہنچ سے کوسوں میل دور ہیں ۔

ذخیرہ اندوزوں نے بھاری مقدار میں چینی ،گھی ،کوکنگ آئل ،دالیں،چاول ، مرچ مصالحہ جات شہر کے پوش علاقوں میں موجود کوٹھیاں کرائے پر حاصل کرکے گوداموں میں تبدیل کرکے اجناس کا سٹاک کر رکھا ہے جبکہ بیشتر دکانداروں نے اندرون شہر کے گلی محلوں میں بڑے بڑے گودام کرائے پر حاصل کرکے اشیاء ضروریہ ذخیرہ کر رکھی ہیں جہاں ہزاروں کی تعداد میں چینی ،گھی آئل ،دالوں، چاول سمیت مرچ مصالحہ جات اور اجناس کی بوریاں چھپا کر خود ساختہ مہنگائی کو عروج پر پہنچا دیا ہے ،ضلع بھر میں ذخیرہ اندوزوں کے خلاف کارروائیاں نہ ہونے کیوجہ سے اشیاء خوردونوش کے نرخوں میں روزانہ کی بنیاد پر اضافہ کیا جاتا ہے ۔

اس امر پر شہریوں نے وزیراعظم پاکستان، وزیراعلیٰ پنجاب، چیف سیکرٹری پنجاب، کمشنر راولپنڈی، ڈپٹی کمشنر جہلم سے مطالبہ کیا ہے کہ ذخیرہ اندوزوں کے خلاف کریک ڈاؤن کا آغاذ کیا جائے اور گوداموں میں چھپائی گئی اشیاء کو مارکیٹوں میں لایا جائے تاکہ ضلع بھر میں قائم ہونے والی خود ساختہ مہنگائی کا خاتمہ ممکن ہو سکے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button