جہلماہم خبریں

نئی حلقہ بندیاں، میونسپل کمیٹی جہلم کی حدود حلقہ این اے 66 میں شامل

جہلم: نئی حلقہ بندیاں، میونسپل کمیٹی جہلم کی حدود کو حلقہ این اے66میں شامل کردیاگیا، نئی حلقہ بندیوں میں عجیب و غریب صورتحال پر سیاسی شخصیات اور عوامی حلقے اضطراب میں مبتلا، سیاسی شخصیات کے ساتھ ساتھ متعدد ووٹرز نے بھی اعتراضات دائر کرنے کیلئے سوچ بچار شروع کردی ۔

رپورٹ کے مطابق الیکشن کمیشن آف پاکستان نے نئی مردم شماری کے بعد ضلع جہلم سے صوبائی اسمبلی کی ایک نشست کم ہونے کے بعد ابتدائی طور پر نئی حلقہ بندیوں کی تفصیل جاری کردی ہے جس کے مطابق حلقہ این اے66سابقہ این اے62میں ووٹرز کی تعداد چھ لاکھ 76ہزار 537رکھی گئی ہے جس کا حدود رقبہ تحصیل سوہاوہ تحصی دینہ قانون گو حلقہ کالاگجراں کے ساتھ میونسپل کمیٹی جہلم کی حدد بھی شامل کی گئی ہے۔

قومی اسمبلی کے سابقہ حلقے این اے63اور موجودہ این اے67سے میونسپل کمیٹی جہلم کی حدود کو نکال کر این اے66سابقہ این اے62میں شامل کردیاگیا ہے۔ میونسپل کمیٹی کے علاوہ تحصیل جہلم اور تحصیل پنڈدادنخان کا حدود اربعہ این اے67میں شامل ہوگا، اس حلقہ میں ووٹرز کی تعداد پانچ لاکھ 46ہزار113رکھی گئی ہے۔

صوبائی حلقوں میں پی پی24ختم کردیاگیا ہے، پی پی25میں تحصیل سوہاوہ تحصیل دینہ شامل ہے جس میں سے قانون گو حلقہ دھریالہ نکال دیاگیا ہے، پی پی26میں دھریالہ تحصیل جہلم شامل ہیں، ان میں سے قانون گو حلقہ داراپور ممیان اور چوٹالہ کو نکال کر پی پی27میں شامل کردیا گیا ہے۔

پی پی27میں قانون گو حلقہ داراپور پٹوار سرکل جہلم قانون گو حلقہ چوٹالہ ممیان اور تحصیل پنڈدادنخان شامل ہے پی پی25میں ووٹرز کی تعداد چار لاکھ سولہ ہزار آٹھ پی پی26میں چار لاکھ63ہزار بارہ جبکہ پی پی27میں ووٹرز کی تعداد چار لاکھ چودہ ہزار 730رکھی گئی ہے۔

نئی حلقہ بندیوں کے بعد جہلم شہر کو این اے66میں شامل کرکے این اے67سے نکالنے پر سیاسی و سماجی شخصیات نے حیرانگی کا اظہار کرتے ہوئے نئی حلقہ بندیوں کو چیلنج کرنے کیلئے صلاح مشورے شروع کردیئے ہیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button