پڑی درویزہسوہاوہاہم خبریں

سوہاوہ کے نواحی علاقہ میں پڑوسی نے ہوا سے شاپرصحن میں آنے پر پڑوسی کو قتل کر دیا

پڑی درویزہ: نواحی علاقہ دئیوال میں قتل کی لرزہ خیز واردات ۔ تیز ہوا سے پلاسٹک شاپنگ بیگ کا کچر ا صحن میں کیوں آیا ؟ پڑوسی ارشد نے عبدالحلیم کو چھری کے وار کر کے قتل کر دیا ، تھانہ سوہاوہ میں مقدمہ قتل درج تفتیش شروع ۔ ملزم گرنوحی جنگل سے گرفتار کر لیا گیا ۔

تفصیلات کے مطابق تھانہ سوہاوہ میں اطلاع دی گئی ہے کہ نواحی گائوں دئیوال کے رہائشی رہائشی ارشد ولد محمد اشرف نے اچانک پڑوسی عبدالحلیم کے کزن ظفر سے گلہ کیا کہ انہوں نے ارشد کے گھر پلاسٹک کے بیگ اور دیگر کچرا جان بوجھ کر پھینکا ہے ۔

جواب میں ظفر اور حلیم نے اس بات کی سختی سے تردید کی کہ ایسا ہر گز نہیں ہے کیونکہ تیز ہوا کے جھونکے قدرت کی طرف سے چل رہے ہیں، تاہم ارشد ولد محمد اشرف اپنی بات پر قائم رہا اور اپنے گھر کی چھت پر آکر گالم گلوچ کرنے لگا اور ان کے گھر پتھرائو بھی کیا جس کے نتیجہ میں ظفر کے گھر کی خاتو ن تھوڑی متاثر بھی ہو گئی لیکن بات وقتی طور پر رفع دفعہ ہو دگئی ۔

اس دوران ارشد ولد اشرف کے دل کا غصہ ٹھندا نہ ہوا ۔ نماز عشاء کی ادائیگی کے بعد جب ظفر اور عبدالحلیم اپنے گھر واپس جارہے تھے تو اپنے دروازے کی گھات لگائے محمد ارشد ولد محمد اشرف نے عبدالحلیم پر پیچھے سے تیز دھار چھری سے گردن پر وار کر دیا ۔ عبدالحلیم موقع پر شدید زخمی ہو گیا ۔ اس حالت میں اسے تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال سوہاوہ پہنچایا گیا لیکن زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے وہ چند لمحات میں جان کی بازی ہار گیا اور جاں بحق ہو گیا ۔

ادھر گائوں دئیوال کے نوجوانوں نے ملز م ارشد کا پیچھا کر نا شروع کر دیا آبادی کے نواح میں موجود جنگلی علاقہ میں پوشیدہ محمدارشد رات بارہ بجے کے قریب مقامی نوجوانوں ، پولیس چوکی پڑی درویزہ اور تھانہ سوہاوہ پولیس کی کوشش کے نتیجہ میں گرفتار کر لیا گیا ۔

تھانہ سوہاوہ پولیس نے پوسٹمارٹم کے بعد عبدلحلیم کی نعش ورثا کے حوالے کر دی ۔ دن ڈھائی بجے مقتول عبدالحلیم کو دئیوال کے قبرستان میں سوگواران کی موجودگی میں سپر د خاک کر دیا گیا۔ نماز جنازہ کی امامت سجادہ نشین دربار عالیہ چھبر سیداں پیر غلا م علی شاہ نے کی۔

واضح رہے کہ قتل کا نشانہ بننے والے بد قسمت عبدالحلیم کی عمر 50سال کے لگ بھگ تھی مرحوم کے پسماندگان میں ایک بیٹا اور تین بیٹیاں لاوارث رہ گئے ہیں جبکہ مرحو م کی اہلیہ چند ماہ قبل انتقال کر گئی ہے ۔ قتل کی لرزہ خیز واردات کے متعلق محمد ارشد ولد محمد اشرف کے نا م قتل کا مقدمہ زیر دفعہ 302ت پ در ج کر لیا گیا ہے اور مزید تفتیش شروع کر دی گئی ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button