دینہاہم خبریں

الیکشن 2018؛ امیدوار ضابطہ اخلاق کی پابندی یقینی بنائیں۔ محمد جہانزیب اعوان، سید مصطفی تنویر

دینہ: امیدوار عام انتخابات کے لئے الیکشن کمیشن آف پاکستان کے جاری کردہ ضابطہ اخلاق کی پابندی یقینی بنائیں،ضابطہ اخلاق کے برعکس لگائے جانیوالے ممنوعہ فلیکس، بل بورڈ، ہورڈنگز فوری طور پر ہٹا دیے جائیں،اسلحہ کی نمائش کرنیوالوں کے خلاف بلاتفریق ایکشن ہوگا، جلسہ کی اجازت کیلئے تین دن قبل درخواست دینا لازم، بڑے سیاسی اجتماعات مخصوص مقامات پر ہی منعقد کئے جاسکتے ہیں۔

ان خیالات کا اظہا ر ڈپٹی کمشنر/ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ آفیسرجہلم محمد جہانزیب اعوان ، ڈی پی او ڈاکٹر سید مصطفیٰ تنویر نے نے ضلع کونسل ہال میں قومی و صوبائی اسمبلیوں کے امیدواران سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر آفاق وزیر، ڈسٹرکٹ الیکشن کمیشنر خورشید عالم، ڈی او انفارمیشن عثمان سندھواور دیگرافسران موجود تھے ۔

ڈپٹی کمشنر محمد جہانزیب اعوان نے کہا کہ ضلع میں عام انتخابات کے شفاف اور پرامن انعقاد کیلئے تمام امیدواروں کو یکساں مواقع کی فراہمی کیلئے پرعزم ہیں، الیکشن کمیشن آف پاکستان نے تمام سیاسی جماعتوں کے مشاورت سے انتخابی ضابطہ اخلاق جاری کیا ہے جس پر عمل درآمد تمام امیدواروں اور سیاسی جماعتوں کی ذمہ داری ہے۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن اور سیاسی جماعتوں کی باہم مشاورت سے مرتب کئے گئے ضابطہ اخلاق کے تحت کسی بھی سائز کے فلیکس، ہورڈنگ، بل بورڈز نہیں لگائے جاسکتے ، خلاف ورزی کرنیوالے امیدوار کواظہار وجوہ کا نوٹس جاری کیا جائے گا اور سمری ٹرائل کے بعد پہلی بار جرمانہ ، دوسری مرتبہ امیدوار کی نااہلی کیلئے کیس مجاز اتھارٹی کو بھجوادیا جائے گا۔ امیدوار الیکشن کمیشن آف پاکستان کے ضابطہ اخلاق کے مطابق 18×23انچ سائز کے پوسٹرز، 3×9فٹ کے بینرز،9×6انچ کے ہینڈبل، پمفلٹ، لیف لیٹس اور 2×3فٹ کا پورٹریٹ لگوا سکتے ہیں۔

ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ بڑے سیاسی اجتماعات مخصوص مقامات کے علاوہ جلسہ کی اجازت کیلئے درخواست پر بھی غور ہو سکتا ہے ، جلسہ منتظمین کیلئے مقرر کردہ شرائط و ضوابط پر عمل کرنا لازم ہوگا۔ انہوں نے واضع کیا کہ انتخابی مہم کے دوران لاؤڈ سپیکر کے استعمال کی اجازت نہیں، امیدوار کارنر میٹنگ میں ساونڈ سسٹم استعمال کر سکتے ہیں، گاڑیوں کی ریلیوں پر بھی پابندی ہوگی ۔

ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ امیدوار اسلحہ کی نمائش پر پابندی کے حکم پر عمل درآمد یقینی بنائیں تاہم وہ اپنی حفاظت کیلئے لائسنسی اسلحہ یا منظور شدہ کمپنی کے گارڈز ساتھ رکھ سکتے ہیں لیکن لائسنسی اسلحہ یا گارڈز کے پاس اسلحہ اسکی نمائش کی بھی ہر گز اجازت نہیں ہوگی۔

ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر ڈاکٹر سید مصطفیٰ تنویر نے کہا کہ عام انتخابات کے دوران امن و امان برقرار رکھنے اور انتخابی ضابطہ اخلاق پر عمل درآمد کیلئے پولیس پوری طرح متحرک ہے ، تمام امیداوار یکساں قابل احترام ہیں، اسلحہ کی نمائش کرنیوالوں کے خلاف بلا تفریق کاروائی ہوگی اور قانونی شکنی کرنیوالوں سے کوئی رعائت نہیں ہوگی، سکیورٹی گارڈز کی آڑ میں بھی کسی کو مسلح افراد ساتھ لیکر چلنے اور خوف و ہراس پھیلانے کی اجازت نہیں دے سکتے تاہم لائسنسی اسلحہ گاڑی میں ساتھ رکھنے پر اعتراض نہیں۔

انہوں نے امید واروں سے کہا کہ وہ ممنوعہ فلیکس، بل بورڈ، ہورڈنگ لگانے والے امیدواروں کو جرمانہ کی سزا کا سامنا یا انکی نااہلی کیلئے کیس بھجوایا جاسکتا ہے ۔ ڈ ی پی او جہلم نے کہاکہ امیداوار صرف انہیں افراد کو اپنی انتخابی مہم میں شامل کریں جنہیں وہ جانتے ہیں ، اگر کسی امیدوار کے ساتھ ایسے عناصر پائے گئے جو کسی نوعیت کی قانون شکنی یا منفی سرگرمیوں میں ملوث ہوئے تو اسے قانون کے مطابق نتائج کا سامنا کرنا ہوگا۔

اس سے قبل عام انتخابات میں حصہ لینے والے امیداروں نے ڈپٹی کمشنر اور ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر سے انتخابی ضابطہ اخلاق کے متعلق سوالات کئے جس کے انہوں نے نہایت اطمینان سے جوابات دیے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button