گرمی اور بجلی کی لوڈشیڈنگ؛ جہلم میں یو پی ایس، سولر سسٹم اور جنریٹرز کی مانگ میں اضافہ ہو گیا

0

جہلم: شہر و گردونواح میں گرمی اور بجلی کی لوڈشیڈنگ کے باعث جنریٹرز اور یو پی ایس کی فروخت اور مرمت کے کام میں بھی تیزی آ گئی، یو پی ایس اور سولر سسٹم کی مانگ میں بھی غیر معمولی اضافہ ہو گیا۔ جنریٹر مکینک نایاب ہو گئے، جنریٹر مکینک، یو، پی ، ایس مرمت کرنے والے کاریگروں نے منہ مانگے داموں جنریٹرز و یو ۔پی۔ ایس مرمت کرنے شروع کر رکھے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق گرمی کی شدت اور بجلی کی لوڈشیڈنگ کے بعد جنریٹر ، یو۔پی۔ایس۔ اور سولر سسٹم کے کاروبار میں ایک دم تیزی آ گئی ہے، لوڈشیڈنگ سے بچنے کے لئے صاحب ثروت شہری نئے جنریٹر ز، یو۔ پی۔ایس۔ سولر سسٹم کو خریدتے نظر آ رہے ہیں جبکہ سینکڑوں لوگ اپنے خراب جنریٹرز ، یو ۔پی۔ ایس ٹھیک کروانے کیلئے مکینکوں کے پیچھے بھاگتے دکھائی دیتے ہیں۔

مکینکوں کے ہسپتالوں میں خراب جنریٹرز و یو ۔پی۔ ایس کی بڑی تعداد نظر آتی ہے۔ گرمی اور لوڈشیڈنگ کے باعث جنریٹرز و یو ۔پی۔ ایس مکینکوں کی اہمیت قدر بڑھ جاتی ہے اور گرمی کے سیزن میں جنریٹرز و یو ۔پی۔ ایس اور سولر سسٹم کے مکینک منہ مانگے پیسے وصول کرتے ہیں۔ شہری اپنے جنریٹرز و یو ۔پی۔ ایس جلدی ٹھیک کروانے کیلئے مکینکوں کے ترلے کرتے نظر آتے ہیں جبکہ مکینک موقع کا فائدہ اٹھاتے ہوئے من مرضی کی اجرت لیتے ہیں۔

اس صورتحا ل کو دیکھتے ہوئے کئی موسمی مکینک بھی میدان میں کود پڑتے ہیں ۔ ماہر مکینک بروقت نہ ملنے پر شہری ان موسمی اور ناتجربہ کار مکینکوں کے ہاتھوں لٹنے پر مجبور ہوتے ہیں۔ جبکہ کئی لوگ بجلی کے متبادل کیلئے یو پی ایس اور سولر سسٹم اور بیٹریاں بھی خرید رہے ہیں۔تاکہ موسم گرما کی شدت کا ڈٹ کر مقابلہ کیا جا سکے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.