کالم و مضامین

غازیوں اور شہیدوں کی سرزمین جہلم کا سپوت چوہدری فواد حسین — تحریر: شہباز بٹ

قارئین!
الیکشن مکمل ہوئے اب وزیر اعظم پاکستان کے الیکشن کا مرحلہ باقی ہے حالت بدل رہے ہیں نئی نئی سیاسی چالیں سامنے آ رہی ہیں بہت سارے لوگ کہتے تھے عمران خان کے ہاتھ میں وزارت عظمی کی لکیر نہیں ہے کچھ نے کہا عمران خان کو سیاست نہیں آتی پھر کہا گیا اب سپیکر اور ڈپٹی سپیکر اپوزیشن ملکر بنائے گی پنجاب میں چوہدری پرویز الہی کے سپیکر نامزد ہونے پر تنقید کی گئی لیکن یہ سب ممکن ہوا اور عمران خان بھی وزیر اعظم بننے کے لیے چند گھنٹوں کی دوری پر ہے،،،سیاست میں کوئی چیز حرف آخر نہیں،،،سب کچھ ممکن ہے،لیکن انہیں ممکن بنانے میں کچھ لوگوں کا کردار ہوتا ہے محنت اور لگن ہوتی ہے لیکن ایسے کاموں کے لیے عقل کا ہونا بہت ضروری ہے،،عقل اور دانشمندی کے بغیر آپ صرف گونگے بہروں والا کردار ہی ادا کر سکتے ہیں ۔

جہلم کے حلقہ این اے 67سے منتخب ہونے والے چوہدری فواد حسین اب پاکستان کی سیاست میں اپنا کردار ادا کر رہے ہیں جی ہاں سب سے پہلے انہوں نے چوہدری برادران سے ملاقات کی اور عمران خان سے ملاقات کے لیے قائل کیا،،ایسے حالات میں جب پاکستان مسلم لیگ (ن)کی قیادت چوہدری برادران سے ملاقات کرنے اور انکی پنجاب میں حمایت حاصل کرنے کے لیے منعتیں کر رہی تھی،،،فواد چوہدری نے چوہدری برادران کو قائل کیا اور دوسرے دن چوہدری شجاعت حسین اور چوہدری پرویز الٰہی نے چیئرمین تحریک انصاف سے ملاقات کی اور قومی و صوبائی اسمبلی میں مکمل حمایت کا اعلان کیا،،فواد چوہدری نے جہانگیر ترین کے ساتھ ملکر متعدد آزاد ممبران قومی و صوبائی اسمبلی کی پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت کروائی۔

فواد چوہدری وزیر اعلی پنجاب کے مضبوط ترین امیدوار تھے انہیں عمران خان نے خود صوبائی اسمبلی کا الیکشن لڑنے کے لیے کہااور عمران خان نے خود پی پی 27سے امیدوار راجہ شاہ نواز کو ٹی فون بھی کیا لیکن مرکز میں پی ٹی آئی کو حکومت بنانے کے لیے زیادہ سے زیادہ نشستیں درکار تھیں اور اپوزیشن سے رابطے بھی ضروری تھے اس لیے عمران خان نے فواد چوہدری کو ٹی ٹونٹی کی بجائے ٹیسٹ کرکٹ کھیلنے پر راضی کیا قابلیت کی بنائی پر فواد چوہدری کو وزارت قانون و انصاف اور اطلاعات و نشریات دو وزارتوں کا قلمدان سونپا جا رہا ہے،،فواد چوہدری نے کم عمری میں بڑے اور منجھے ہوئے سیاستدان کا روپ دھار لیا ہے۔

بلوچستان سے محمود خان اچکزئی جیسے سیاستدان کو شکست دیکر رکن قومی اسمبلی منتخب ہونے والے قاسم خان سوری کو چوہدری فواد حسین کی تجویز اور پرپوزل پر پاکستان تحریک انصاف کی قیادت نے ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی منتخب کروایا،،چونکہ اسوقت ملک معاشی بحران کا شکار ہے تو اس کے حل کے لیے بھی فواد چوہدری،اسد عمر کے ساتھ ملکر متعدد ممالک کے سربراہان کے ساتھ رابطوں میں ہیں،،،رہ گئی بات جہلم کی تو فواد چوہدری ضلعی انتظامیہ کے ساتھ بھی مسلسل رابطوں میں ہیں انکے بھائی فراز چوہدری کی ڈپٹی کمشنر اور محکمہ تعلیم کے افسران سے بیشتر ملاقاتیں ہو چکی ہیں،،دادا پور کے علاقہ بجوالہ میں ڈگری کالج اور پنڈ دادنخان میں یونیورسٹی کیمپس،، کھیوڑہ اور تھل میں پانی اور صفائی کے سسٹم کی بہتری جیسے منصوبوں پر انٹرنیشنل کمپنیوں سے بات چیت شروع ہو چکی ہے،،متعدد علاقوں میں گراؤنڈز بھی بنائے جا رہے،،فواد چوہدری پاکستانی سیاست میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں اسوقت غازیوں اور شہیدوں کی سرزمین کا سپوت ملکی فیصلوں میں پیش پیش ہے وہ جہلم کا حصہ ضرور لیکر آئے گا اور پھر شائد مخالفین بھی کہیں گے۔
فواد آیا سواد آیا

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button