تبدیلی آگئی، مہنگائی نے غریب شہریوں کی چیخیں نکلوا دیں، مہنگائی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی

0

جہلم: تبدیلی آگئی ، مہنگائی نے غریب شہریوں کی چیخیں نکلوا دیں ، اشیائے خوردونوش کی بڑھتی قیمتوں نے محنت کش اور مڈل کلاس طبقہ کو پریشانی میں مبتلا کر دیا۔

مہنگائی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ، بناسپتی گھی اور کوکنگ آئل کی فی کلو 200 سے زائد ، دودھ کی قیمت 100 کے لگ بھگ اور دہی فی کلو قیمت 100 روپے پر جا پہنچی ، سبزیاں ، پھل ، دالیں ، مرچ، مصالحہ جات خرید سے باہر ہونے لگیں، چھوٹا گوشت غریب افراد کے لئے خواب بن کر رہ گیا ، ، چھوٹا گوشت ایک ہزار روپے اور بڑاپانی ملا گوشت پانچ سو روپے فی کلو فروخت کیا جانے لگا۔

مہنگائی کا طوفان برپا ہونے سے غریب عوام اور محنت کش مڈل کلاس طبقہ سابقہ حکومتوں کے ادوار یاد کرنے لگا ، جبکہ پرائس کنٹرول مجسٹریٹس نے معنی خیز خاموشی اختیار کرلی ، تاجروں اور دکانداروں نے ضلعی انتظامیہ اور مارکیٹ کمیٹی کے نرخناموں کی جاری کردہ لسٹوں پر عملدرآمد کرنا چھوڑ دیا، اشیائے خوردونوش کی من مانی قیمتیں مقرر کرلیں گئیں۔

منافع خور تاجروں اور دکانداروں کے خلاف کوئی کارروائی عمل میں نہیں لائی جارہی ، خود ساختہ قیمتیں مقرر کرکے تاجروں نے شہریوں کو لوٹنا معمول بنا لیا۔

مہنگائی نے شہریوں کی اندگی اجیرن کر دی ہے ، غریب عوام نے پی ٹی آئی حکومت اور عمران خان سے بہت سی امیدیں وابستہ کر رکھی تھی ، مگر پی ٹی آئی کے دور حکومت نے مہنگائی بیروزگاری کے ریکارڈ توڑ دیئے ہیں ، حکومت نے وعدوں کے مطابق عوام کو ریلیف نہیں دیا اور مہنگائی پر قابوپانے میں بھی بری طرح ناکام دکھائی دیتی ہے۔

اس امر پر غریب شہریوں نے وزیر اعظم اور وزیر اعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ نوٹس لیکر بڑھتی مہنگائی پر کنٹرول اور مہنگائی کا تدارک کرکے عوام کو ریلیف فراہم کیا جائے ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.