جہلم

سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں جہلم سمیت پنجاب بھر کے بلدیاتی اداروں کو بحال نہ کیا جا سکا

جہلم: سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلے کی روشنی میں جہلم سمیت پنجاب بھر کے بلدیاتی اداروں کو بحال نہ کیا جا سکا۔

سپریم کورٹ آف پاکستان نے 25 مارچ 2021ء کو بلدیاتی اداروں کی بحالی کا حکم نامہ جاری کیا تھا تاہم سپریم کورٹ آف پاکستان کے حکم کو تقریباً 1ماہ مکمل ہونے کو ہے لیکن صوبے بھر کے بلدیاتی اداروں کو تاحال بحال نہ کیا جا سکا اور نہ ہی سیکرٹری لوکل گورنمنٹ پنجاب کی جانب سے بلدیاتی اداروں کی بحالی کا کوئی تحریری نوٹیفکیشن جاری کیا جاسکا۔

اس سلسلے میں بلدیاتی اداروں کے بعض رہنماؤں کا کہنا ہے کہ جب تک بلدیاتی اداروں کی بحالی کا نوٹیفکیشن جاری نہیں ہوجاتا اس وقت تک سیکرٹری بلدیات پنجاب صوبے کے بلدیاتی ادارے بحال نہیں کرسکتے۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ آف پاکستان نے رواں سال 25مارچ کو پنجاب بھر کے بلدیاتی ادارے بحال کرنے کا حکم جاری کیا تھا جس پر عملدرآمد کرتے ہوئے جہلم سمیت پنجاب کے مختلف اضلاع میں بلدیاتی نمائندوں نے اپنے اپنے دفاترکی ذمہ داریاں سنبھال لیں تھیں جو 2/3 روز بعد انتظامیہ نے ان اداروںکو سیل کرکے بلدیاتی نمائندوں کو کام کرنے سے روک دیا تھا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button