جہلم

تھانوں میں انسپکٹرز کی جگہ ناتجربہ کار سب انسپکٹرز کی بطور ایس ایچ اوز تعیناتیوں سے مسائل بڑھ گئے

جہلم: ضلع بھر کے متعدد تھانوں میں انسپکٹرز کی جگہ ناتجربہ کار سب انسپکٹرز کی بطور ایس ایچ اوز تعیناتیوں سے مسائل بڑھ گئے، جرائم کی وارداتوں کیساتھ شہریوں کے باہمی تنازعات میں بھی اضافہ ، شہریوں کا پولیس کی کارکردگی پر عدم اعتماد، اعلیٰ پولیس حکام سے پولیسنگ نظام پر نظر ثانی کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق ضلع بھر کے متعدد تھانوں میں انسپکٹرز کی بجائے سب انسپکٹروں کو ایس ایچ اوز تعینات کردیاگیاہے ، جونیئر اور ناتجربہ کار سب انسپکٹروں کی بطور ایس ایچ اوز تعیناتیاں زیادہ تر سیاسی اور بااثر افسران کی سفارشوں پر کی جارہی ہیں جبکہ تھانوں میں سینئر انسپکٹرز سے بطور تفتیشی آفیسر کے کام لئے جارہے ہیں۔

سینئر اور جونیئر ز کے عہدوں میں فرق ، اختیارات کی غیر منصفانہ تقسیم کے پیش نظر انسپکٹرز کی جونیئرز کے ماتحت رہ کر دلجمعی سے کام نہیں کر پاتے جس سے انسپکٹرز کی کارکردگی پر برا اثر اور جرائم میں اضافہ ہورہاہے ، بعض سب انسپکٹرز بطور ایس ایچ او اپنے اصل فرائض پر توجہ دینے کی بجائے علاقوں کے بااثر افراد ، چوہدریوں ، قبضہ گروپوں سے تعلقات استوار کر رکھے ہیں ۔ تھانوں میں جرائم پیشہ افراد کا آنا جانا لگا رہتا ہے۔

شہریوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب محمد عثمان بزدار ، آئی جی پنجاب سے معاملہ کی سنگینی کا ادراک کرتے ہوئے پولیس نظام میں بہتری لانے اور میرٹ پر انسپکٹرز کی بطور ایس ایچ اوز تعیناتیوں کا مطالبہ کیا ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button