جہلم

محکمہ مال کا راشی پٹواری اینٹی کرپشن کے شکنجے میں، پٹواری کی جیب سے نشان زدہ 3 لاکھ 40 ہزار روپے برآمد

جہلم: محکمہ مال کا راشی پٹواری اینٹی کرپشن کے شکنجے میں ، پٹواری کی جیب سے نشان زدہ 3 لاکھ 40 ہزار روپے برآمد ، جوڈیشل ریمانڈ پر ملزم کو جیل بجھوا دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق محمد کامران ولد محمد سلمان ساکن ڈھوک بڈھال تحصیل دینہ نے تھانہ اینٹی کرپشن میں درخواست دیتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ بڑا گراں میں ایک کنال جگہ خرید کی ہے ، جس کا انتقال کروانا مقصود ہے ، سائل نے اپنے مذکورہ حلقہ کے پٹواری حلقہ بڑا گراں، انزک محمود سے انتقال کے لئے رابطہ کیا اور کہا کہ مجھے چالان بنوا دیں میں سرکاری فیس جمع کروانا چاہتا ہوں ، مگر پٹواری مذکور مجھ سے رشوت طلب کی اور کہا کہ آپ 4 لاکھ روپے ادا کریں تو میں انتقال کر کے دے دونگا۔

سائل نے بتایا کہ انتقال کی سرکاری فیس 1 لاکھ 92 ہزار ہے جبکہ سائل سرکاری فیس جمع کروانے کے لئے تیار ہے ، مگر پٹواری مذکور ماننے کو تیار نہ ہے ، سائل نے پٹواری مذکور کی منت سماجت کی ہے کہ 4 لاکھ روپے بہت زیاد ہ ہیں مہربانی کرکے پیسے کم کرو ، جس پر انزک محمود پٹواری نے کہا کہ آپ فائنل 3 لاکھ 40 ہزار روپے دے دو اب اس سے کم نہیں ہونگے ، جناب والا میں مذکورہ پٹواری کو رقم رشوت نہ دینا چاہتا ہوں ، بلکہ ریڈ کروا کر رنگے ہاتھوں گرفتار کروانا چاہتا ہوں۔

درخواست ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج صاحب کو پیش کی گئی جس پر ریڈنگ مجسٹریٹ صاحب کی زیرنگرانی رشوت ستانی کا ریڈ کیا گیا، دوران ریڈ کارروائی انزک محمود پٹواری حلقہ بڑا گراں تحصیل دینہ سے رقم نشان زدہ مبلغ 3 لاکھ 40 ہزار وپے برآمد کر لئے گئے ، تھانہ اینٹی کرپشن پولیس نے محمد کامران ولد محمد سلیمان ڈاکخانہ ڈھوک بڈھال کی درخواست پر زیر دفعہ 161/ppc ، 5/2/47 پی سی اے کے تحت مقدمہ درج کرکے انزک محمود پٹواری کو جوڈیشل ریمانڈ پر ڈسٹرکٹ جیل جہلم منتقل کر دیا ہے۔

قابل زکر بات یہ ہے کہ ضلع جہلم کے بیشتر پٹوار حلقوں میں پٹواریوں نے رشوت کا بازار گرم کر رکھا ہے جبکہ بیشتر پٹواری اپنے پٹوار حلقوں میں جانا پسند نہیں کرتے اور انہوں نے اپنے دفاتر شہروں میں قائم کرکے پراپرٹی ڈیلروں کے ساتھ اور ہاؤسنگ سوسائٹیز کے مالکان کے ساتھ معاملات طے کرکے ذمینوں کی خرید و فروخت کام شروع کر رکھا ہے جس کی وجہ سے شہریوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہاہے ۔

شہریوں نے وزیرا علیٰ پنجاب، چیف سیکرٹری پنجاب سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیاہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button