جہلم

میونسپل کارپوریشن جہلم کے عملے کی موجیں، اہلکار لمبی دیہاڑیاں لگانے میں مصروف، عملہ نوٹوں میں کھیلنے لگا

جہلم: میونسپل کارپوریشن جہلم کے عملے کی موجیں، میونسپل کارپوریشن کے اہلکار لمبی دیہاڑیاں لگانے میں مصروف، رکشہ اسٹینڈ کا ٹھیکہ نہ ہونے کیوجہ سے میونسپل کارپوریشن کا عملہ نوٹوں میں کھیلنے لگا، چنگ چی رکشہ کی ٹیکس وصولی میں مالی بدعنوانی ، افسران خاموش تماشائی ، ٹیکس کی وصولی میں نمایاں کمی ۔

پرچیوں کی مد میں روزانہ ہزاروں روپے خردبرد ہونے کا انکشاف،سالانہ ٹھیکہ منسوخ ہونے پر افسران نے میونسپل کارپوریشن کے عملے کو رکشہ ڈرائیوروں سے پرچی وصولی کی ذمہ داریاں سونپ رکھی ہیں ،میونسپل کارپوریشن کا عملہ منسوخ ہونے والے ٹینڈرز کے مقابلے میں نصب سے بھی کم ریکوری کر رہا ہے ۔ جس سے روزانہ کی بنیاد پر میونسپل کارپوریشن کو ہزاروں روپے کی پھکی دی جارہی ہے ۔

تفصیلات کے مطابق میونسپل کارپویشن کی انتظامیہ ہر سال جون میں رکشہ پارکنگ کا سالانہ ٹھیکہ دیتی ہے ، رواں سال سپریم کورٹ نے بلدیاتی نمائندوں کو بحال کرنے کے احکامات جاری کررکھے ہیں جس کیوجہ سے بلدیہ جہلم کے چیئرمین نے عدالت سے میونسپل کارپوریشن میں نیلام ہونے والے ٹینڈرز کے خلاف حکم امتناعی حاصل کر رکھا ہے جس کیوجہ سے میونسپل کارپوریشن کی انتظامیہ میونسپل کارپوریشن کے ٹھیکے نیلام کرنے کی بجائے مختلف ٹیکسسز اہلکاروں کے ذریعے وصول کررہی ہے۔

ٹھیکیدار روزانہ کی بنیاد پر ہزاروں روپے کی ریکوری کرکے میونسپل کارپوریشن میں جمع کرواتا اور ملازمین کو تنخواہیں بھی ادا کرتا ، حکم امتناعی کیوجہ سے میونسپل کارپوریشن نے ٹیکس ریکوری کی ذمہ داریاں اپنے ملازمین کو سونپ رکھی ہیں ، جس کیوجہ سے روزانہ کی بنیاد پرنصب سے بھی کم ریکوری کی جارہی ہے۔

رکشہ ڈرائیوروں کا کہنا ہے کہ میونسپل کارپوریشن کی انتظامیہ نے کرپٹ ، بدعنوان ملازمین کو ٹیکس ریکوری کی ذمہ داریاں سونپ رکھی ہیں ، ریکوری کرنے والے اہلکار حصہ بقدر جثہ متعلقہ ذمہ داران کو پہنچا رہے ہیں ، جس کیوجہ سے چنگ چی رکشہ ڈرائیوروں سے وصول کی جانے والی ریکوری میں سے سرکاری خزانے میں جمع کروائی جانے والی رقم آٹے میں نمک کے برابر ہے۔

رکشہ ڈرائیوروں نے وزیراعلیٰ پنجاب،صوبائی وزیربلدیات ، چیف سیکرٹری پنجاب، سیکرٹری بلدیات سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیاہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button