کالم و مضامین

ڈی پی او جہلم عبدالغفار قیصرانی نے جو کہا کر کے دکھایا — تحریر: آصف حیات مرزا

پولیس خدمت مرکز کے قیام سے عوام کے دل موہ لیے ۔۔جرائم میں کمی اور نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کرانے میں اہم کردار ادا کیا۔۔۔ضلع بھر سے جعلی پیروں،عاملوں،منشیات اور قمار بازوں کا جینا حرام کر دیا۔۔عبدالغفار قیصرانی با اصول اور خوف خدا رکھنے والے انصاف پسند انسان ہیں ۔۔ ڈی پی او جہلم نے عوام میں پولیس کا کھویا ہوا اعتماد اور وقار بحال کیا۔۔۔پنڈدادنخان میں15کی سروس کے قیام کے لیے کوشاں ہیں۔۔محنتی اور ایماندار اہلکاروں کو انعامات دے کر حوصلہ افزائی کرنے کی اچھی روایت قائم کی۔۔۔تحصیل عوام دوست گروپ علاقہ کی فلاح و بہبود کے لیے شانہ بشانہ آپ کے ساتھ ہیں۔

کہتے ہیں کہ انسان فرشتہ نہیں ہوتا لیکن اعمال کی وجہ سے فرشتہ نما ضرور بن سکتا ہے ہمارے مذہب میں کہا گیا ہے کہ دکھی انسانیت کی خدمت کرنا صدقہ جاریہ ہے لیکن یہ کسی کسی کے مقدر میں ہوتا ہے بعض لوگ سب کچھ ہوتے ہوئے بھی اس خدمت سے محروم رہتے ہیں اور بعض کچھ نہ ہوتے ہوئے بھی اس خدمت سے مالامال ہوتے ہیں اور اس خدمت کا جذبہ اللہ پاک اپنے پیاروں کو ہی دیتا ہے۔

انسانیت کی خدمت کرنے کے کئی طریقے ہوتے ہیں جیسے کہ رب تعالی انسان کو کسی عہدہ پر فائز کرتا ہے تو ان کے پاس انسانیت کی خدمت کرنے کے لیے بہت بڑا موقع ہوتا ہے کیونکہ وہ ملازمت کے ساتھ دنیا میں نام بنا سکتے ہیں لیکن وہ اگر چاہیں تو اپنے عہدے کی مناسبت سے انسانیت کی خدمت کر کے آخرت کے لیے بھی اپنے اعمال بنا سکتے ہیں پولیس رشوت اور ناانصافی میں ہمارے ملک کا بدنام ترین محکمہ ہے لیکن جب یہ محکمہ تشکیل دیاگیا تو ان6 خوبیوں کو ملا کر پولیس لفظ بنایا گیا اور انہی خوبیوں کے مالک جوان بھرتی کیے گئے جو کہ مندرجہ ذیل ہیں۔

شائستہ۔۔۔۔۔۔POLITE۔۔۔۔ P
فرمانبرداری۔۔۔OBEDIENT۔۔۔O
وفادار۔۔۔۔۔۔۔LOYAL۔۔۔۔ ۔ L
ہوشیار۔۔۔۔INTELIGENTI ۔۔ I
بہادر۔۔۔COURAGECUS۔۔ C
موٹر۔۔۔۔۔۔ELFICIEAL۔۔۔ E

عبدالغفار قیصرانی نے بطور ڈی پی او جہلم کا چارج سنبھالاتھا تو ہر ایک کی نظر ین ان پر لگی ہوئی تھیں کہ کیسے افسر ہوں گے کیا کریں گے پالیسی کیا ہو گی خاص کر انصاف حاصل کرنے کے لیے در بدر ٹھوکریں کھانے والوں کے دل زیادہ دھڑک رہے تھے پھر آہستہ آہستہ خبریں آنے لگیں کہ عبدالغفار قیصرانی با اصول اور خوف خدا رکھنے والے انصاف پسند انسان ہیں وہ اپنے محکمہ پولیس کے معیار اور وقار کو بلند رکھنے کے ساتھ مظلوموں کی داد رسی اور اپنے زیر کمانڈ ایریا کو جرائم سے پاک کرنے کا ارادہ لائے ہیںمجھے یہ سب کچھ سن کر خوشی بھی ہوئی اور خواب سا بھی لگا کیونکہ ہر آنے والے افسر ایسے ہی ارادے دکھاتا ہے بلند و بانک دعوے کرتا ہے پھر سب کچھ حسب معمول چلنا شروع ہو جاتا ہے ۔

جب میری ملاقات ڈی پی او جہلم عبدالغفار قیصرانی سے ہوئی تو ان کا حسنء اخلاق اور مسائل کو حل کرتا دیکھ کر بہت متاثر ہوا توڈی پی او جہلم عبدالغفار قیصرانی نے میرٹ کو اپنا اصول بنایا ۔۔۔کھلی کچہریاں لگاہیں جس کا مقصد انصاف عوام کی دہلیز پر پہچانا تھا عبدالغفار قیصرانی انسان دوست اور جرائم کو نا پسند کرتے ہیں صحافیوں کے ساتھ ان کا دوستانہ رویہ اپنی مثال آپ ہیں پولیس کو معاشرے میں اچھی نگاہ سے نہیں دیکھا جاتا لوگوں کے ذہن میں پولیس کا ایک تصور ہوتا ہے کہ اگر پولیس کے پاس گئے تو لینے کے دینے پڑ جائیں گے۔

پولیس کی بدنامی بھی صحافیوں کی طرح ہے کہ اگر کسی کے حق میں خبر لگائی تو لوگ کہتے ہیں کہ کتنے پیسے لیے اور اگر کسی کے خلاف خبر لگائی توکہتے ہیں کہ بلیک میل کر رہے ہیں اسی طرح پولیس بھی اگر کسی بے گناہ کا ساتھ دے تو کہتے ہیں کہ پیسے لیے ہیں اور اگر میرٹ پر کام کریں تو بھی بدنام پولیس قانون پر عمل درآمد اور کسی کمزور کے ساتھ ہونے والے ظلم اور جرائم کو ختم کراتی ہے لیکن پولیس میں ٹائوٹ سسٹم ہوتا ہے اور پولیس میں موجود چند کالی بھیڑیں جو ان ٹائوٹوں کے اشاروں پر ناچتے ہوئے چند پیسوں کی خاطر بے گناہ کو گناہ گاربنا دیتے ہیں جس سے پورا پولیس محکمہ بدنام ہو جاتا ہے لیکن کہتے ہیں کہ اگر کسی محکمے کا سربراہ ایماندار اور اپنے فرائض صحیح طریقہ سے سرانجام دے تو نیچے والد عملہ بھی خوف زدہ ہو جاتا ہے اور پھر رشوت اور ٹائوٹ سسٹم بھی دم توڑ جاتا ہے۔

اس طرح ضلع جہلم کی پولیس کے پورے پنجاب میں اس وقت چرچے ہیں کہ یہاں جرائم کم ہیں اور انصاف میرٹ پر ملتا ہے تو اس کا سہرا ضلع جہلم پولیس کے سربراہ جناب عبدالغفار قیصرانی کو جاتا ہے جنہوں نے ضلع جہلم پولیس کا چارج سنبھالنے کے بعد اس بات کا اعلان کیا کہ پولیس کا فرض معاشرے سے جرائم کو ختم کرنا اور انصاف عوام کی دہلیز پر فراہم کرنا ہے، انہوں نے یہ بات ہی نہیںکہی بلکہ خود کو عوام کے درمیان رکھ کر یعنی علاقہ میں کھلی کچہریاں لگا کر عوام کے مسائل سنتے ہیں اور موقع پر ہی ان کو حل کرنے کے احکامات جاری کیے جس سے عوام کو بہت حوصلہ ملا کہ ان کی فریاد سننے کے لیے پولیس کا سربراہ خود ان کے دروازے پر آتا ہے۔

ڈی پی او نے ضلع جہلم میں جرائم پر کنٹرول کر کے عوام کو میرٹ پر انصاف فراہم کر کے ایک مثال قائم کر دی، ڈی پی او جہلم عبدالغفار قیصرانی کی ایک اور خصوصیت یہ بھی ہے کہ وہ خود بھی کالم نگار ہیں اور صحافیوں کے لیے اپنے دل میں بہت اچھی جگہ رکھتے ہیں اور صحافیوں کو عزت اور احترام فراہم کرکے ان کی حوصلہ افزائی کرتے ہیں اسی لیے عوام کے ساتھ ساتھ صحافتی برادری میں بھی ڈی پی او جہلم عبدالغفار قیصرانی کا ایک اپنا مقام ہے۔

انہوں نے مجھے ایک انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ عوام ہی معاشرے میں پھیلے جرائم کی نشا ندہی کر سکتے ہیں حکومت پنجاب پولیس میں دن بدن بہتری لانے میں کوشاں ہیں جدید تکنیکی آلات نصب ہوں گے جو21 صدی کے شانہ بشانہ ہونگے تاکہ عوام کو بہتر حفاظتی سہولیات اور انصاف میسر ہو مگر سب کچھ عوام کے تعاون کے بغیر ناممکن ہے چونکہ عوام ہی احسن طریقے سے معاشرے میں پھیلے جرائم کے خاتمے میں مدد کر سکتی ہے۔

انہوں نے نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کرانے میں اہم کردار ادا کیا سادہ لو ح عوام کو لوٹنے والے جعلی پیروں اور عاملوں کا ضلع بھر سے خاتمہ کرنے کا پیڑا اٹھایا جسے عوام نے بہت سراہا نئی نسل کو تباہ کرنے والے منشیات فروشوں اور قمار بازوں کا گھیر ا تنگ کیا اور اور بڑے بڑے طاقت ور گروہوں کو سلاخوں کے پیچھے ڈال دیاعبدالغفار قیصرانی نے بہت کم عرصہ میں ہی ضلع بھر کی عوام کے دلوں میں اپنا بہت بڑا مقام بنا کیا ۔

تحصیل عوام دوست گروپ نے ڈی پی او جہلم عبدالغفار قیصرانی کی توجہ پنڈدادنخان کے اہم مسئلہ کی طرف دلائی جس میںکریکٹر سرٹیفکیٹ ،لرننگ ڈرائیونگ لائسنس،ایف آئی آر کی کاپی ،ڈرائیونک لائسنس اور رینیول کے علاوہ کئی دوسرے مسائل کی طرف دلائی جس پر جناب نے لوگوں کے دکھ کو اپنا دکھ سمجھتے ہوئے دن رات محنت کر کے تحصیل پنڈدادن خان کی عوام کے لیے تحصیل لیول پر پہلا پولیس خدمت مرکز منظور کرا کر اہل علاقہ کو ایک بہت بڑی پریشانی سے نجات دلا کر عوام کے دل موہ لیے۔

ان سہولیات کے بعد ڈی پی او پنڈدادن خان کی عوام کے لیے ایک اور اہم سروس 15 کے لیے کوشان ہیںعوام دوست گروپ کی ایک تجویز ہے کہ اگر پرانے تھانہ کی بلڈنگ کے چھتوں کی مرمت کرا کر 15 سروس کا دفتر وہاں بنا دیا جائے تو اس سے گورنمنٹ گرلز کالج کو بھی تحفظ مل جائے گا۔تحصیل عوام دوست گروپ عوام کی فلاحو بہبود کے لیے شانہ بشانہ جناب ڈی پی او جہلم عبدالغفار قیصرانی کے ساتھ ہے ۔

سب سے اہم بات یہ ہے کہ عبدالغفار قیصرانی اپنے ماتحت عملہ سے کام لینا بھی خوب جانتے ہیں محنتی ،ایماندار اور مخلص اہلکاروں کو ان کی اچھی کارکردگی پر ان کو انعامات دے کر ان کی حوصلہ افزائی کرکے ایک اچھی روایت قائم کی ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button