جہلم

خطرناک عمارتوں کی ازسر نو تعمیر یا مرمت کے حوالے سے عملدرآمد کی شرح مایوس کن قرار

جہلم: صوبائی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی نے جہلم سمیت تینوں تحصیلوں کی خطرناک عمارتوں کی ازسر نو تعمیر یا مرمت کے حوالے سے عملدرآمد کی شرح مایوس کن اور اپنے ریمارکس میں ابتر صورتحال کو ضلعی وتحصیل افسران کی غفلت و لاپرواہی کا نتیجہ قرار دیا ہے۔

کچھ عرصہ قبل خوفناک زلزلہ کے فوری بعد صوبائی حکومت کی طرف سے سرکاری و غیر سرکاری خطرناک عمارتوں کی تعمیر نو یا مرمت کیلئے خصوصی پروگرام شرو ع کیا گیا، ابتداء میں ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اٹھائے گئے مگر وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ حکومت کا یہ منصوبہ بھی روایتی عدم توجہی کے باعث سست روی کا شکار ہو کر رہ گیا۔

ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ جہلم سمیت تینوں تحصیلوں ، تحصیل دینہ، تحصیل سوہاوہ، تحصیل پنڈدادنخان میں مجموعی طور پردرجنوں سرکاری و غیر سرکاری خطرناک عمارتوں کی از سر نو تعمیر شروع نہیں کی جاسکی،متعدد عمارتوں کی مرمت یا انہیں مسمار کیاجانا تھا ، جبکہ کئی عمارتیں بدستور خطرے کا الارم بجا رہی ہیں ۔

اسطرح مجموعی طور پر صورتحال انتہائی مایوس کن قرار دیتے ہوئے کہا گیا کہ یہ ضلعی افسران کی عدم توجہی کا نتیجہ ہے لہذا فوری طور پر فوکل پرسن مقرر کرتے ہوئے اس منصوبے کی جلد از جلد تکمیل یقینی بنائی جائے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button