جہلم

آگ سے جھلسنے والے مریضوں کو جدید طبی سہولیات سے محرومی باعث تشویش ہے۔ انور خان آفریدی

جہلم: ڈسٹرکٹ بار جہلم کے معروف قانون دان کرنل (ر) انور خان آفریدی نے کہا کہ جہلم ضلع بھر میں کسی بھی سرکاری ہسپتال میں جدید برن یونٹ،انسداد منشیات یونٹ قائم نہیں جس کیوجہ سے متاثرین کوپرائیویٹ ہسپتالوں سے علاج کروانا پڑرہاہے ، برن و انسداد منشیات سہولیات کی عدم فراہمی کی وجہ سے مریضوں کی شرح اموات میں روز بروز تیزی سے اضافہ ہورہا ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے صحافیوں سے گفتگو میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ جہلم کے سرکاری ہسپتال میں جدید برن یونٹ اور انسداد منشیات یونٹ نہ ہونے کی وجہ سے مریضوں کو لاہور ، کھاریاں ، اسلام آباد، راولپنڈی کے ہسپتالوں میں ریفر کر دیا جاتا ہے جس کے نتیجہ میں اکثر اوقات مریض راستہ میں ہی سسک سسک کر دم توڑجاتے ہیں۔

کرنل (ر) انور خان آفریدی نے کہا کہ سالانہ اربوں روپے کا زرمبادلہ کمانے والے ضلع جہلم کے آگ سے جھلسنے والے مریضوں کو جدید طبی سہولیات سے محرومی باعث تشویش ہی نہیں بلکہ باعث افسوس بھی ہے ، انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب اور صوبائی وزیر صحت پنجاب سے اصلاح احوال کا مطالبہ کیا ہے کہ ضلع جہلم کے سب سے بڑے ہسپتال میں جدید برن یونٹ اور انسداد منشیات یونٹ کا قیام عمل میں لایا جائے تاکہ ضلع جہلم کے شہری مقامی سطح پر علاج معالجہ کروا سکیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button