بجلی کے بلوں میں ٹیکس چارجز کی بھرمار، صارفین ذہنی اذیت کا شکار

0

جہلم: بجلی کے بلوں میں ٹیکس چارجز کی بھرمار، صارفین ذہنی اذیت کا شکار ، وزیر اعظم پاکستان سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق موجودہ دور حکومت میں صارفین بجلی کی قیمت سے زیادہ اس پر عائد ٹیکس ادا کر رہے ہیں، مختلف صوبائی اور وفاقی محکموں کے ٹیکس ہر ماہ بلوں میں شامل کرکے دھڑا دھڑ وصول کئے جارہے ہیں ، جس سے صارفین ذہنی اذیت کا شکار ہو چکے ہیں۔

شہریوں کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ بجلی کے بلوں کے ذریعے محصول بجلی ، ٹیلی ویژن فیس ، جنرل سیلز ٹیکس، ڈی ایس سرچارج، انرجی چارجز (ایف پی اے) ، جنرل سیل ٹیکس ایڈجسٹمنٹ ، ای ڈی آن (ایف پی اے)، جہلم نیلم سرچارج، میٹر کا کرایہ ، کرایہ سروس اور نہ جانے کیا کیا ٹیکس چارجز عوام سے وصول کئے جارہے ہیں۔

شہریوں نے کہا کہ عوام پہلے ہی صبح سے شام تک ٹیکس ادا کر رہی ہے ، جس سے عوام ذہنی اذیت میں مبتلا ہو چکے ہیں ، حکومت شہریوں کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا رویہ اپنا ئے ہوئے ہے ، ہر جگہ عوام کو ہی پریشانی میں مبتلا کیا گیا ہے۔

شہریوںنے وزیر اعظم پاکستان عمران خان ، چیف جسٹس آف پاکستان، وفاقی وزیر پانی و بجلی سے مطالبہ کیا ہے کہ بجلی سمیت دیگر یوٹیلیٹی بلوں سے سرچارجز کو ختم کیا جائے تا کہ عوام سکھ کا سانس لے سکیں اور اپنی بیوی بچوں کو باعزت طریقے سے 2 وقت کی روٹی مہیا کر سکیں ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.