دینہاہم خبریں

نیشنل ہائی وے کی جانب سے رکاوٹوں کی وجہ سے دینہ میں انڈر پاس تعمیر نہ ہو سکا۔ مہر محمد فیاض

دینہ: پاکستان مسلم لیگ ن نے2013میں جب اقتدار سنبھالا تو اُس وقت پورے ملک میں دہشت گردی اور لوڈ شیڈنگ کا بہت بڑا مسئلہ تھا مگر آج آپ لوگ ایمان سے بتائیں کہ ان میں کس حد تک کمی آئی ہے۔ اُمیدوار برائے ایم پی اے PP25 مہر محمد فیاض کا دینہ میں پاکستان مسلم لیگ ن کے مرکزی دفتر کی افتتاحی تقریب میں دھواں دار خطاب۔

تفصیلات کے مطابق چند روز قبل پاکستان مسلم لیگ ن کے سابق ایم پی اے اور 25جولائی 2018کو ہونے والے الیکشن میں اُمیدوار برائے ایم پی اے PP25مہر محمد فیاض نے باقائدہ سیاسی مہم کا آغاز کر دیا۔اس سلسلہ میں دینہ میں نزد لاہور بس سٹاپ جی ٹی روڈ مرکزی دفتر میں افتتاحی تقریب کا آغاز کیا گیاجس میں پاکستان مسلم لیگ ن کے چیدہ چیدہ عہدے دار، متحرک ورکرز اور میڈیا کو دعوت دی گئی۔تقریب کا آغاز تلاوت قران پاک سے ہوا ۔ آپ ﷺ سے اظہار عقیدت کے طور پر نعت کے چند اشعار پیش کیے گئے۔

تقریب میں سابق ایم این اے نگہت میر ، چیئرمین یوسی مدوکالس چوہدری سہیل ظفر ، راجہ لیاقت علی سینئر رہنماء پاکستان مسلم لیگ ن ، یوتھ کونسلر میاں محمد عتیق، ممبر بیت المال راجہ نوید افضل، دیگر کونسلر حضرات ، نامور شخصیات اور مسلم لیگ ن کے متحرک ورکرز نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ اس موقع پر چند جیالوں نے جذباتی انداز میں تقاریر کیں جس میں پی ٹی آئی کو تنقید کا نشانہ بنایا اور اپنے قائد میاں محمد نواز شریف کے حق میں اپنی آواز کو بلند کرتے ہوئے دوبارہ وزیر اعظم کی سیٹ پر دیکھنے کی خواہش کی۔

سابق ایم این اے نگہت میر کا کہنا تھا کہ ہم اپنے قائدین میاں محمد نواز شریف اور میاں محمد شہباز شریف کے وفادار سپاہی ہیں اُن کے فیصلوں کا دل سے احترام کرنے والے ہیں اور مسلم لیگ ن کا ووٹر اور سپوٹر بھی اس کا اظہار اپنی ووٹ سے کرتا ہے۔25جولائی کو ووٹ دے کر ثابت کر دیں کہ آپ پاکستان مسلم لیگ ن سے پیار کرتے ہیں۔

اس موقع پر مہر محمد فیاض نے اپنے جیالوں سے دھواں دار خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جب ہم نے 2013میں اقتدار سنبھالا تو ہر ایک شخص لوڈ شیڈنگ اور دہشت گردی سے پریشان تھا ۔ہمارے لیے یہ ایک بہت بڑا چیلج تھا کہ ان پر کس طرح قابو پایا جائے۔ مگر اللہ تعالیٰ کی مدد سے آج آپ ایمان سے جواب دیں کہ ہم نے کس حد تک قابو پا لیا ہے۔آج آپ سکون سے رات کو سوتے ہیں اور دن بھر اپنے کاموں میں مصروف رہتے ہیں ۔ نہ دہشت گردی نہ لوڈ شیڈنگ ۔میں نے اپنے اقتدار میں اپنی پوری کوشش کی کہ اپنے حلقے کے تمام مسائل کو حل کر سکوں ۔

انہوں نے کہا کہ مجھ سے سوال کیا جاتا ہے کہ انڈر پاس کا وعدہ کیا تھا مگر نہیں بنا تو آپ کی معلومات میں اضافہ کرتا چلوں کہ اس میں NHAکی طرف سے چندرکاوٹیں تھیں جنہیں دور کرنے میں وقت لگ گیا اور اب جب رکاوٹیں دور ہو گئیں تو حکومت کا وقت ختم ہو گیا مگر آپ لوگ پریشان نہ ہوں اب یہ کام ہو کر رہے گا۔میرا مطلب ہے کہ جو حکومت بھی بنی تو یہ پراجیکٹ ضرورمکمل ہو گا۔

آخر میں مہر محمد فیاض نے تشریف لانے والے تمام افراد کا شکریہ ادا کیا اور وعدہ کیا کہ جو مسائل رہ گئے ہیں، انہیں آئندہ اقتدار میں آنے کے بعد ضرور حل کروں گا۔ آپ نے مجھے پہلے بھی بہت پیار دیا ہے اور آگے بھی اُمید کر تا ہوں کہ آپ مجھے مایوس نہیں کریں گے،عوام کا تابعدار رہوں گا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button