جہلم

میونسپل کارپوریشن جہلم کے ذمہ داران کی غفلت، شہر کی گلیوں اور بازاروں میں تجاوزات کی بھرمار

جہلم: میونسپل کارپوریشن کے ذمہ داران کی غفلت ، شہر کی گلیوں اور بازاروں میں تجاوزات کی بھرمار، حادثات و لڑائی جھگڑے روزانہ کامعمول بن گئے ، میونسپل کارپوریشن کے افسران کے گرد ٹاؤٹوں کا پہرہ ، بازاروں سے تجاوزات ہٹانا میونسپل کارپوریشن کے لئے چیلنج بن گیا۔

تفصیلات کے مطابق شہری علاقوں کی گلیوں اور بازاروں میں نئے تعمیر ہونے والے مکانات کے مالکان نے سرکاری گلیوں ، بازاروں ، سڑکوں پر قبضہ کرتے ہوئے گھروں کے داخلی دروازوں کے باہر غیر قانونی سیڑھیاں اور گاڑیوں کے داخلے کے لئے ریمپ تعمیر کرنے شروع کر رکھے ہیں جس کی وجہ سے گلیاں ، بازار، سڑکیں تنگ ہو چکی ہیں اور حادثات روزانہ کا معمول بن چکے ہیں۔

سڑکوں پر بلا خوف و خطر قبضہ گروپوں کا راج ہونے کیوجہ سے شہریوں کا دست و گریباں ہونا کوئی نئی بات نہیں جبکہ بعض جھگڑوں کے ماضی میں مقدمات بھی درج ہوئے ، سرکاری افسران کے گرد مبینہ طور پر ٹاؤٹوں اور بااثر افراد کی بیٹھک ہونے کیوجہ سے تجاوزات مستقل بنیادوں پر قائم ہو چکی ہیں ، جس کو ختم کرنا میونسپل کارپوریشن کے شعبہ انکروچمنٹ کے عملے کے بس کی بات نہیں رہی۔

دوسری جانب گلی محلوں میں نئے تعمیر ہونے والے مکانات ، کوٹھیاں ، پلازہ مالکان نے غیر قانونی طریقوں سے سیڑھیاں اورر یمپ تعمیر کرکے گلیوں ، بازاروں کو بھی تنگ کرنا شروع کر دیا ہے ، اس بارے عوامی حلقوں نے متعدد بار متعلقہ شعبہ کے ذمہ داران کو تحریری و زبانی طور پر آگاہ کیا لیکن میونسپل کارپوریشن کے شعبہ انکروچمنٹ کے ذمہ داران نے غیر قانونی طریقوں سے تعمیر ہونے سیڑھیاں اور ریمپ ختم کرنے کی بجائے خاموشی کو ترجیح دی جس کیوجہ سے مکانوں ، کوٹھیوں ، دکانوں ، پلازوں کے باہر سیڑھیاں اور ریمپ تعمیر کرنا فیشن بن چکا ہے۔

شہری کی سماجی ، رفاحی ، فلاحی ، مذہبی ، شہری تنظیموں کے عمائدین نے ڈپٹی کمشنر سے مطالبہ کیا ہے کہ گلیوں بازاروں میں تعمیر ہونے والی سیڑھیاں تھڑے ، ریمپس وغیرہ مسمار کرکے گلیوں ، بازاروں اور سڑکوں کو کشادہ کیا جائے تاکہ شہریوں کو آمدورفت میں پیش آنے والی مشکلات کا خاتمہ ممکن ہو سکے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button