پنڈدادنخان

گولپور کی عوام پانی کی بوند بوند کو ترس گئے، پانی کے مسئلہ پر حکومت گونگی اور بہری ہو گئی

پنڈدادنخان: گولپور میں پینے کے پانی کے مسئلہ پر حکومت گونگی اور بہری ہو گئی اہلیان گول پور کے احتجاج اور میڈیا کی چیخ و پکار اعلی حکام کے کانوں تک نہ پہنچ سکی، اہل علاقہ پینے کا پانی مانگتے ہیں جبکہ بعض لوگ اسے سیاسی رنگ دے دیتے ہیں، وزیر اعلی پنجاب کے خوشحال پاکستان کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے، زیر زمین پانی کڑوا حکومت کی طرف سے پانی کی کوئی فراہمی نہیں چیخ و پکار اعلی حکام نہیں سنتے، اہلیان گول پور جائیں تو جائیں کہاں ۔

تفصیلات کے مطابق ایک عرصہ سے یونین کونسل گول پور کی عوام زندگی کی بنیادی ضرورت پینے کے پانی کی بوند بوند کو ترس رہے ہیں، اس معاملہ میں انہوں نے ہڑتالیں کیں احتجاج کیے میڈیا کے ذریعے اپنی تکلیف حکومت کے اعلی حکام تک پہنچانے کی کوشش کی لیکن ان کی ہر کوشش ناکام ہوگئی لگتا ہے۔

حکومت وقت کے حاکموں نے گولپور کی عوام سے منہ موڑلیا جیسے کے گول پور پاکستان کا نہیں انڈیا کا حصہ ہو۔اہل علاقہ جب پینے کے پانی کا مطالبہ کرتے ہیں تو چند لوگ اسے سیاسی رنگ دے کر اس معاملہ کو ٹالنے کی کوشش کرتے ہیں۔

یونین کونسل گول پور کی عوام کا کہنا ہے کہ اب ان کی آس اور امید کی کرن چیف جسٹس آف پاکستان ہیں، انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ چیف جسٹس آف پاکستان ہمارے اس اہم مسئلہ کا از خود نوٹس لیں اور ہمیں زندگی کی اہم ضرورت پینے کے پانی کی فراہمی مہیا کریں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button