کھیوڑہاہم خبریں

کھیوڑہ میں پھر ڈکیتی، 4 مسلح ڈاکوؤں نے سڑک پر ناکہ لگا کرگاڑیوں کو لوٹ لیا

کھیوڑہ: سالٹ رینج کھیوڑہ کاپہاڑی علاقہ کچے کا علاقہ بن گیا ،ایک ماہ میں کامیاب ڈکیتی کی چوتھی کارروائی، سلسلہ وار ڈکیتیوں کی دلیرانہ وارداتوں کی تازہ کارروائی گزشتہ رات 10بجے پیش آئی، متاثرین کے مطابق تین سے چار مسلح افراد نے سڑک کے درمیان ٹرک کھڑا کر کے درجنوں گاڑیوں کو تسلی سے لوٹا، مقامی پولیس سے رابطہ ممکن نہیں ہوسکا، ڈی پی او جہلم سے فوری نوٹس کا عوامی مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق کھیوڑہ شہر سے چند کلومیٹر کے فاصلے پر پہاڑی ایریا میں گزشتہ رات آتشیں اسلحہ سے مسلح 4 ڈاکوؤں نے ڈاکے کی دلیرانہ واردات کی، ڈاکوؤں نے پنڈدادنخان، چکوال، راولپنڈی جانے والی مسافر گاڑیوں سمیت ٹرکوں پرائیویٹ کاروں اور موٹرسائیکلوں کو سڑک بلاک کر کے روک کر لائنوں میں لگانے کے بعد لوٹ مار کا سلسلہ شروع کیا۔

خواتین کے زیور موبائل فون نقدی اور دیگر ساز و سامان لوٹنے کے ساتھ ساتھ خواتین سمیت متعدد مسافروں کو زودکوب بھی کیا، یاد رہے کہ اس پانچ کلو میٹر پٹی میں ناکہ کی وارداتیں معمول بن چکی ہیں اور لگتا ہے یہ ایریا کچے کا علاقہ بن چکا ہے، اسی وجہ سے یہاں پر چیک پوسٹ اور پولیس قومی رضا کاروں کی نفری ہونے کے باوجود حکومتی رٹ نظر نہیں آتی، پولیس پیٹرولنگ وین کی کارکردگی صفر ہے کیونکہ اس کے باوجود ڈاکو واردات کرکے بھاگنے میں کامیاب ہو جاتے ہیں۔

گزشتہ ایک ماہ میں یہ چوتھی کامیاب کارروائی ہے، حالیہ واردات میں لوٹے جانے والے ٹیچر محمدطلعت کے بیان کے مطابق وہ اپنی فیملی کے ساتھ پنڈدادنخان آ رہے تھے کہ ڈاکوؤں نے دس بجے کے قریب ایک درجن سے زائد گاڑیوں کو اسلحہ کی نوک روکی جانے والی گاڑیوں سے لاکھوں روپے لوٹ کر اطمینان و سکون کے ساتھ فرار ہو گئے، پولیس کی جانب سے کسی بھی کاروائی کی تا حال کوئی رپوٹ نہیں ہے ۔

یاد رہے پولیس چوکی کھیوڑہ کا پی ٹی سی ایل نمبر عدم ادئیگی کیوجہ سے کئی سالوں سے بند ہے اور اس چوکی کا عملہ ہر ماہ بعد تبدیل ہوجاتا ہے، ایمرجنسی صورت حال میں مقامی پولیس سے رابطہ کا کوئی طریقہ موجود نہیں ہے۔ مقامی میڈیا نے ہر واردات کے بعد متعلقہ چوکی انچارج,ایس ایچ او,ڈی ایس پی پنڈدادنخان سمیت ڈی پی او جہلم کو تفصیلی آگاء کیا تاہم ابھی تک کوئی خاطر خوا کاروائی نظر نہیں آئی۔ مقامی عوامی سماجی حلقوں نے مقامی این اے اور وزیر اطلاعات فواد چوہدری سے اپیل کی ہے کہ بین الاقوامی شہرت کے سیاحتی شہر کی عوام کو کچے کے علاقہ سے نجات دلائی جائے اور اس ہر امن علاقے کو علاقہ غیر بننے سے روکنے کے لیے سخت اقدامات کروائے جائیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button