میونسپل کمیٹی کھیوڑہ سے جائیداد سرٹیفکیٹ کا اجراء گزشتہ 10 سال سے بند، عوام سراپا احتجاج

0

کھیوڑہ: میونسپل کمیٹی کھیوڑہ سے جائیداد سرٹیفکیٹ کا اجراء گزشتہ 10 سال سے بند جبکہ درجنوں مختلف ٹیکسوں کی وصولی اور نقشہ جائیداد کی پاسنگ باقاعدگی سے جاری، اربوں مالیت کی جائیداد بے وقعت،گورنمنٹ کو کروڑوں کا سالانہ نقصان، عوام سراپا احتجاج، وزیر اعلی پنجاب سے ایکشن کا عوامی مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق بین الاقوامی شہرت یافتہ شہر کھیوڑہ کی ایک لاکھ سے زائد آبادی کو میونسپل کمیٹی کھیوڑہ نے جائیداد سرٹیفکیٹ کا اجراء گزشتہ 10 سال سے زائد عرصہ سے بند کر رکھا ہے جس سے عوام الناس میں شدید بے چینی اوراضطراب پایا جاتا ہے۔

جائیداد سرٹیفکیٹ کا اجراء نہ ہونے کی وجہ سے اربوں روپے مالیت کی جائیدادوں کی نہ تو رجسٹری ہوتی ہے اورنہ ہی ان جائیدادوں کی بنیاد پر عدالت سے کسی شخص کی ضمانت لی جاسکتی ہے لیکن میونسپل کمیٹی کھیوڑہ انہی جائیدادوں پر صفائی ٹیکس ،پانی ٹیکس، جائیداد اندراج فیس،نقشہ فیس وغیرہ باقاعدگی سے وصول کر رہی ہے۔

جب بھی کوئی شہر کا رہائشی میونسپل کمیٹی کسی بھی قسم کے ر یکارڈ کے لئے جائے اس سے ہزاروں روپے رنگ برنگے ٹیکسوں کی مد میں جمع کروانے کا عندیہ دیا جاتا ہے کھیوڑہ میں جائیدادوں کی خریدو فروخت بھی جائیداد سرٹیفکیٹ کے نہ ملنے کی وجہ سے رجسٹری کی بجائے صرف عام اشٹام پیپر پر ہوتا ہے جو گورنمنٹ کو سالانہ کروڑوں روپے کے ریونیو سے محرومی کا سبب ہے۔

دوسری جانب قبضہ مافیا کے لیے سہولت کا سبب بن رہا ہے۔جائیداد سرٹیفکیٹ کا اجراء بند ہونے سے جائدادوں کی ملکیت مشکوک ہو گئی ہے جو بہت سے مسائل کے ساتھ ساتھ دیوانی مقدمات میں اضافے کا سبب ہے۔

عوامی سماجی حلقوں نے ڈی سی جہلم سمیت وزیر اعلی پنجاب سے اس بنیادی عوامی مسئلے پر فوری ایکشن لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.