جہلم

عیدالاضحیٰ کے قریب آتے ہی قربانی کے جانوروں کی قیمتیں ساتویں آسمان پر پہنچ گئیں

جہلم: عیدالاضحیٰ قریب آتے ہی قربانی کے جانوروں کی قیمتیں ساتویں آسمان پر ، قصابوں نے بھی لوٹ مار پلان تشکیل دینا شروع کر دیا۔

مڈل کلاس اور غریب طبقے کے افراد سخت ذہنی اذیت میں مبتلا ،روز بروز بڑھنے والی کمر توڑ مہنگائی کیوجہ سے حالات کے ستائے شہریوں کے لئے قربانی کے جانور خریدنا کسی چیلنج سے کم نہیں ، مہنگائی میں روز بروز اضافہ ہونے کیوجہ سے زیادہ تر لوگ اونٹ ، گائے اور بچھڑے میں حصہ ڈالنے کو ترجیح دے رہے ہیں۔

اس حوالے سے شہریوں کا کہنا ہے کہ نارمل بکرے اور دنبے کی قیمت30 ہزار سے50 ہزار سے کم نہیں جبکہ گائے ، اونٹ اور بچھڑے کی قیمتیں ڈیڑھ لاکھ سے لیکر 3 لاکھ تک بتائی جارہی ہیں، مہنگائی سے خفا شہریوں کو لوٹنے کے لئے قصابوں نے بھی پلان تشکیل دینا شروع کر رکھا ہے۔

عید کے پہلے روز گائے ، اونٹ اور بچھڑے کو ذبح کرنے کے لئے تقریباً 12 سے 15 ہزار روپے فی جانور فیس مقرر کی گئی ہے ، جبکہ بکرے اور دنبے کو ذبح کرنے کے عوض 4 سے 5 ہزار روپے وصول کئے جائیں گے ، قصابوں کی جانب سے بھاری رقوم کامطالبہ کئے جانے کیوجہ سے مڈل کلاس اور غریب طبقے کے افراد سخت ذہنی ازیت کا شکار ہو کر رہ گئے ہیں ۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ ڈپٹی کمشنر کو چاہیے کہ جانور ذبحہ کرنے کے ریٹ مقرر کریں اور جن قصابوں نے کورونا ویکسین لگوا رکھی ہے انہیں سرٹیفکیٹ جاری کئے جائیں بغیر سرٹیفکیٹ جانور ذبحہ کرنے والے قصابوں کے خلاف فوجداری مقدمات درج کئے جائیں تاکہ شہریوں کو کورونا وائرس سے محفوظ رکھا جا سکے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button