دینہ

دینہ سہولت بازار کا اہتمام کرکے انتظامیہ نے شہریوں کے مسائل میں اضافہ کر دیا

دینہ: سہولت بازار کا اہتمام کرکے انتظامیہ نے شہریوں کے مسائل میں اضافہ کردیا ہے، اشیاء خورد و نوش میں خود ساختہ اضافہ انتطامیہ کے لیے سوالیہ نشان ہے۔

تفصیلات کے مطابق حکومت پنجاب کی ہدایت پر شہر دینہ میں سہولت بازار کا قیام لایا گیا، امید تھی کہ غریب اور متوسط طبقہ استفادہ کرے گا، مقام افسوس اس وقت سہولت بازار میں معیاری اشیاء دستیاب نہیں ہیں۔

دکانداروں نے ناقص اشیاء خوردنی سہولت بازار میں رکھی ہوئی ہیں سوال پیدا ہوتا ہے کہ اگر غریبوں کو ریلیف دینا مقصود نہیں تھا تو سہولت بازار کا ڈرامہ رچانے کی کیا ضرورت تھی، اب کھلے بازار میں گھی آٹا چینی ذخیرہ اندوزوں کے رحم و کرم پر ہے۔

نوبت یہاں تک پہنچ چکی ہے کہ مہنگائی کی وجہ سے شہری ایک کلو آٹا بجائے تھیلا خریدتا ہے گھی 250 گرام چینی 125 گرام خریدنے کی سکت رکھتا ہے موجودہ وقت میں جو مہنگائی دینہ شہر میں ہوئی ہے ماضی قریب اور بعید میں اس کی مثال نہیں ملتی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button