لاکھوں شہری پینے کے صاف پانی کی نعمت سے محروم، میونسپل کمیٹی کے ذمہ داران نے شہریوں سے منہ موڑلیا

0

جہلم: لاکھوں شہری پینے کے صاف پانی کی نعمت سے محروم میونسپل کمیٹی کے ذمہ داران نے بھی شہریوں سے منہ موڑلیا ، میونسپل کمیٹی کے افسران نے شہریوں کو سہولیات مہیا کرنے کی بجائے خاموشی اختیار کر لی ، شہری مایوسی کا شکار ہونے لگے۔ میونسپل کمیٹی کے شعبہ پبلک ہیلتھ کے ذمہ داران نے عوام دشمن پالیسیاں شروع کر رکھی ہیں ، شہری سراپا احتجاج۔

تفصیلات کے مطابق میونسپل کمیٹی نے شہریوں کو سہولیات فراہم کرنے کے حوالے سے میونسپل کمیٹی کی حدود کے اندر 33 ٹیوب ویل نصب کر رکھے ہیں ، اس طرح ٹیوب ویل آپریٹر صبح اور شام کے مقررہ اوقات میں ٹیوب ویل چلا کر شہریوں کو پانی مہیا کرنے کے پابند ہیں جنہیں واٹر سپلائی کے بلوں سے وصول ہونے والی رقم سے تنخواہیں ادا کی جاتی ہیں۔ لیکن ناتجربہ کار عملے کیوجہ سے نصب کے قریب ٹیوب ویل بند پڑے ہوئے ہیں، جس کی بنیادی وجہ ٹیوب ویل آپریٹروں کا سرکاری افسران اور سیاست دانوں کے ڈیروں پر خدمات سرانجام دینا اور میونسپل کمیٹی کے افسران کا لاڈ پیار بتایا جاتا ہے۔

میونسپل کمیٹی کے ذمہ داران نے کبھی ضرورت محسوس نہیں کی کہ 33 ٹیوب ویل کا دورہ کرکے اصل حقائق معلوم کئے جائیں بلکہ درجہ چہارم کے ملازمین کی بتائی ہوئی باتوں پر عمل کرتے ہوئے ٹیوب ویلوں کے دروازے بند کر رکھے ہیں جوکہ آج کل نشئیوں کی محفوظ پناہ گاہوں میں تبدیل ہو چکے ہیں منشیات استعمال کرنے والے نشئیوں نے ایسے کمروں کو اپنے زیر استعمال لا کر نشے کی عادت پوری کرتے ہیں ، دوسری جانب شہری پانی نہ ملنے کیوجہ سے میونسپل کمیٹی کے خلاف سراپا احتجاج ہیں۔

شہریوں نے ڈپٹی کمشنر جہلم سے مطالبہ کیاہے کہ میونسپل کمیٹی کے ذمہ داران کو ٹیوب ویلوں کا دورہ کرنے کا پابند بنایا جائے اور بند ٹیوب ویلوں کو دوبارہ فعال کرکے شہریوں کو پانی کی سہولت مہیا کی جائے تاکہ شہری پانی جیسی نعمت سے مستفید ہو سکیں ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.