دینہ

اسسٹنٹ کمشنر دینہ کی وارننگ کے باوجود مین بازار میں تجاوزات کا خاتمہ ممکن نہ ہو سکا

دینہ: اسسٹنٹ کمشنر دینہ کی وارننگ کے باوجود مین بازار دینہ کا ناجائز تجاوزات خاتمہ ممکن نہ ہو سکا ،مین بازار دوکانداروں نے اپنی دوکانوں کے سامنے تھڑے کرایہ پر لگوا لیے جو کہ نا جائز تجاوازت میں شامل ہیں ،مین بازار میں ناجائز تجاوزات کی وجہ سے مرد وخواتین اوربزرگوں کو خرایدری میں مشکلات کا سامنا ، فرحت جمیل ٹی ایم اے انفورسمنٹ انسپکٹر کو ناجائز تجاوزات کے خاتمہ کے سلسلے میں کئی بار لڑائی جھگڑوں اور تذلیل کا سامنا کرنا پڑا ۔

تفصیلات کے مطابق مین بازار دینہ شہر کا ایک مصروف ترین بازار ہے جہاں سے مرد و خواتین ،بچے بوڑھے خریداری کرتے ہیں ،اسسٹنٹ کمشنر دینہ نے چارج سنبھالتے ہی شہر کا دورہ کیا تھا اور خصوصا مین بازار کے دوکانداروں کو وارننگ جاری کی تھی کہ وہ اپنے طورپر مین بازار سے ناجائز تجاوزات کا خاتمہ کر لیں بہتر ہے کہ انتظامیہ کو ئی ایکشن لے لیکن اس کے باوجود بااثر دوکانداروںنے ناجائز تجاوزات کو ختم نہیں کیا بلکہ صورتحال مزید خراب ہو گئی ہے۔

مین بازار کی صورتحال اس وقت یہ ہے کہ ہر دوکاندار نے اپنی دوکان کے سامنے ایک اور دوکان تھڑے کی شکل میں لگوا لی ہے جس کا وہ باقاعدہ کرایہ وصول کرتے ہیں،مرد و خواتین کا مین بازار سے گزرنا مشکل ہو گیا ہے ،ریڑھی بان علیحدہ مین بازار کی روڈ پر گردش کرتے دکھائی دیتے ہیں ،اس کے بعد رہی سہی کسر دینہ کے دوکانداروں کا سامان لانے والے ریڑھے نکال دیتے ہیں جو کہ گڈز سے سامان لایا جاتا ہے۔

اس بات پر پابندی ہونی چاہے کہ دن کو گڈز سے سامان 2بجے کے بعد مین بازار میں داخل ہونے دیا جائے ،مین بازار کے شروع میں بلدیہ دینہ کی طرف سے لگایا گیا سنگل بھی نیچے کر دیا جاتا ہے جس کی وجہ سے گاڑیاں بھی آسانی سے مین بازار میں داخل ہونا شروع ہو جاتی ہیں جبکہ دن کو بڑی چھوٹی گاڑیوں کا مین بازار میں داخلہ بند ہے ،خواتین دوران شاپنگ مین بازار مرد و خواتین کے رش کی وجہ سے سخت پریشان ہیں۔

عوام الناس نے ڈپٹی کمشنر دینہ ،اسسٹنٹ کمشنر دینہ،چیئرمین میونسپل کمیٹی دینہ ،ٹی ایم اے بلدیہ دینہ سے ناجائز تجاوزات کے خلاف آپریشن کا مطالبہ کیا ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button