جہلماہم خبریں

نئے بلدیاتی نظام کی خبریں گردش کرنے سے سیاسی حلقے ایک بار پھر سرگرم

جہلم: جہلم سمیت پنجاب بھر میں نئے بلدیاتی نظام کی خبریں گردش کرنے سے سیاسی حلقے ایک بار پھر سرگرم ہو چکے ہیں، تاہم نئے بلدیاتی نظام کے حوالہ سے مسلم لیگ (ن) کے منتخب بلدیاتی نمائندے و امیدواران کچھ پریشان دکھائی دیتے ہیں جبکہ دوسری جانب تحریک انصاف کے تمام ورکرز اور امیدواران کے چہروں پر خوشی کے آثار نمایاں ہیں۔

مسلم لیگ (ن) سے تعلق رکھنے والے افراد کا کہنا ہے کہ پنجاب میں جو بلدیاتی نظام نافذہے اس کو حکومت پنجاب نے نہایت سوچ بچار کے بعد لاگو کیا تھا اور اس سے عوامی مسائل کو حل کیا جارہاہے ، اس بلدیاتی نظام کو تبدیل کرنا غلط ہوگا۔

دوسری جانب پی ٹی آئی سے تعلق رکھنے والے افراد کا کہنا ہے کہ موجودہ بلدیاتی نظام 70 سالہ بوسیدہ نظام ہے جس میں اختیارات کو نچلی سطح پر بالکل بھی منتقل نہیں کیا جا سکتا ، جس کی وجہ سے عوامی مسائل جوں کے توں چلے آرہے ہیں اور ایک لوٹ مار کا بازار گرم ہے ، اس کے علاوہ کچھ نہیں۔

تحریک انصاف کے نئے بلدیاتی نظام میں شفافیت کو ترجیح دی گئی ہے اور کرپشن کا راستہ روکنے کے لئے باضابطہ قانون موجود ہے ، جس کی وجہ سے کرپشن کی بہتی گنگا میں ہاتھ دھونے والے چہرے پریشان دکھائی دے رہے ہیں نیابلدیاتی نظام حقیقی تبدیلی کی بنیادثابت ہوگااور شہریوں کے مسائل میں واضح کمی ہوگی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button