جہلم

جہلم میں غیر معیاری اشیائے خوردونوش کی فروخت، شہریوں کی زندگیاں داؤ پر لگ گئیں

جہلم: ضلعی انتظامیہ کی عدم توجہی کے باعث شہر و گردنواح میں فروخت ہونیوالی غیر معیاری خوراک اور اشیائے خوردنی شہریوں کے لئے خطرناک و جان لیوا بیماریوں کا باعث بن رہی ہے۔ شرح اموات میں غیر معمولی اضافہ ، شہریوں کی زندگیاں داؤ پر لگ گئیں ۔
آلودہ فضائی ماحول بھی بیماریوں کے پھیلاؤ کا سبب بننے لگا، ناقص و غیر معیاری خوراک کے باعث ہارٹ اٹیک سے ہلاکتوں میں اضافہ ۔ ہیپاٹائٹس ، معدے کے السر ، پھیپھڑوں ، گردوں کے مرض ، کینسر ، سانس ، ناک ،گلے ، دمہ سمیت مختلف بیماریوں کا شہری شکار ہو رہے ہیں۔ محکمہ خوراک ،لائیوسٹاک ،محکمہ صحت کے فوڈ انسپکٹرز، پنجاب فوڈ اتھارٹی ، محکمہ تحفظ ماحولیات کے حکام نے ’’ملاوٹ مافیا‘‘ کے سامنے گھٹنے ٹیک دیئے ۔
جہلم شہر کے بازاروں سمیت گردونواح میں قائم چکیوں سے ملاوٹ شدہ مرچوں ، کھلے مصالحہ جات، مردہ و بیمار جانوروں کا گوشت، کیمیکل سے تیار ہونے والا ناقص و غیر معیاری دودھ، دہی، ہوٹلوں ، ریڑھیوں پر فروخت ہونیوالے ناقص کھانے اور دیگر استعمال کی اشیائے خوردونوش شہریوں میں بیماریوںکا موجب بن رہی ہیں ، بھٹیوں سمیت تندوروں سے اٹھنے والا خطرناک دھواں اور آلودہ ماحول بھی شہریوں کیلئے موذی امراض کا سبب بن رہا ہے۔
ضلع بھر میں ناقص و غیر معیاری خوراک اشیاء خوردونوش سر عام دیدہ دلیری کے ساتھ فروخت کی جارہی ہیں۔ ملاوٹ مافیا اور 2 نمبر جعلی اشیاء فروخت کرنیوالے جعلسازوں نے شہر کے بازاروں میں بھی’’پنجے ‘‘ گاڑ رکھے ہیں۔
شہر اور گردونواح کے بازاروں میں ملاوٹ مافیا چھایا ہوا ہے چیک اینڈ بیلنس کا نظام غیر فعال ہونے سے شہری اپنی رگوں میں زہر اتارنے پر مجبور اور زہر خوردنی کے عادی ہونے سے خطرناک جان لیوا بیماریوں میں مبتلا ہوکر دنیا فانی سے رخصت ہو رہے ہیں۔ غیر معیاری ناقص خوراک استعمال کرنے سے 20سے 22 سال کے نوجوان دل کے عارضے اور شوگر جیسی مہلک بیماریوں میں مبتلا ہو رہے ہیں۔
جعلسازوں نے شہر سمیت نواحی علاقوں میں ازخود لگائی جانے والی مرچ ،مصالحوں اور کیمیکل سے تیار ہونے والے دودھ کی فیکٹریاں قائم کر رکھیں ہیں۔ جہاں سے ناقص و غیر معیاری مال تیار کر کے شہر اور گردونواح کے علاقوں میں سپلائی کیا جاتا ہے۔
اس امر پر شہریوں نے ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی، ڈپٹی کمشنر سے مطالبہ کیا ہے کہ نوٹس لیکر غیر معیاری خوراک ، دودھ دہی ، مرچ مصالحہ جات اور مردہ و لاغر بیمار جانوروں کا گوشت، مرغیوں کا گوشت فروخت کرنے والے موت کے سوداگروں سمیت جعلسازوں کے خلاف فوجداری مقدمات درج کروائے جائیں تاکہ شہری بیماریوں سے محفوظ رہ سکیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button