دینہ

دینہ میں بڑھتے سودی نظام نے عوام کی زندگیاں مشکل کر دی، اقساط پر اشیاء کی فروخت میں اضافہ

دینہ: شہر میں بڑھتے سودی نظام نے عوام کی زندگیاں مشکل کر دی ،اقساط پر اشیاء کی فروخت میں دن بدن اضافہ جس میں سود کی شرح کی کوئی حد مقرر نہیں ،عوام قسطوں پر چیزیں تو خرید لیتے ہیں لیکن رقم کی واپس ادائیگی مقررہ وقت پر نا ہونے کی وجہ سے مشکل میں پھنس جاتے ہیں ،ساتھ ساتھ گارنٹی دینے والے بھی مشکلات کا شکارہیں۔

تفصیلات کے مطابق دینہ شہر و گرد و نواح میں سودی کاروبار کرنے والی مختلف دوکانیں اور چلتے پھرتے افراد موجود ہیں جو سود پر لوگوں کو رقم دیتے ہیں ،آج کل لوگ اپنی ضرورت کو پورا کرنے کے لیے اقساط پر اشیاء خرید لیتے ہیں جن کی شرح سود بہت زیادہ ہوتی ہے جس کو وہ بیچ کر اپنی ضرورت تو پوری کر لیتے ہیں لیکن واپسی رقم کی ادائیگی کے لیے ان کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ جاتا ہے اور وہ پھنس جاتے ہیں جس کی وجہ سے بعض اوقات گھر تک گروی رکھنے کی نوبت آ جاتی ہے۔

دینہ شہر میں سودی کاروبار میں دن بدن اضافہ ہوتا جا رہا ہے ،سودی کاروبار کرنے والے بڑی آسانی سے لوگوں کو اپنے جال میں پھانس لیتے ہیں ،عوام کے اس بڑھتے ہوئے رحجان کی وجہ سے معاشرے میں لڑائی جھگڑے جنم لیتے ہیں ، جب کہ ڈی پی او جہلم نے سودی کاروبار کرنے والوں کے خلاف اعلان جنگ کر رکھا ہے اس کے باوجود دینہ شہر میں سودی کاروبار بہت تیزی سے پھیل رہا ہے ۔

عوام الناس نے ڈی پی او جہلم عبدالغفار قیصرانی سے مطالبہ کیا ہے کہ سودی کاروبار کرنے والوں کا خفیہ سروے کراویا جائے اور سودی کاروبار کرنے والے افراد کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button