ضلع جہلم میں مہنگائی کی لہر میں متبادل ایندھن عام آدمی کی پہنچ سے باہر

0

جہلم: مہنگائی کی لہر میں متبادل ایندھن عام آدمی کی پہنچ سے باہر، اوگرانے ایل پی جی کی قیمت 135 روپے مقرر کی تو مافیانے خود ساختہ اضافہ کرکے 180روپے فی کلو فروخت کرنا شروع کردی، شہری سراپا احتجاج، وزیر اعظم پاکستان ، چیف جسٹس آف پاکستان سے نوٹس لینے کا مطالبہ ۔

تفصیلات کے مطابق سردی کی شدت بڑھتے ہی سوئی گیس کی بندش اور کم پریشر کے باعث شہری ایل پی جی سلنڈر ، لکڑی، کوئلہ اور مٹی کا تیل استعمال کرتے ہیں، مگر مہنگائی کی اس لہر میں متبادل ایندھن بھی عام آدمی کی پہنچ سے کوسوں میل دور ہو گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق گزشتہ ماہ ایل پی جی 110 روپے کلو تک فروخت کی جارہی تھی، مگر سردی بڑھتے ہی اوگرا نے ایل پی جی کی فی کلو قیمت میں 25 روپے کا اضافہ کر دیا ، مگر اس اضافے کے باوجود ایل پی جی مافیا نے ازخود نرخوں میں اضافہ کرکے مہنگے داموں ایل پی جی فروخت کرنی شروع کر رکھی ہے جس کیوجہ سے محنت کش دیہاڑی دار طبقہ شدید متاثر ہو رہاہے ۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ وفاقی حکومت شہریوں کے بنیادی مسائل پر توجہ دے اور بے لگام مہنگائی کو کنٹرول کرنے کے لئے گرانفروشوں کے خلاف کارروائیاں کی جائیں تاکہ شہریوں کو مہنگائی کے اس پرفتن دور میں ریلیف مل سکے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.