پان و گٹکا زہریلے چونے کے استعمال سے منہ کے مرض پھیلنے کا خدشہ لاحق، متعلقہ ادارے خاموش تماشائی

0

جہلم: شہر و مضافاتی علاقوں میں پان و گٹکا زہریلے چونے کے استعمال سے منہ کے مرض پھیلنے کا خدشہ لاحق، متعلقہ ادارے خاموش تماشائی کا کردار ادا کرنے لگے، ذمہ دار ادارے چشم پوشی کی بجائے کریک ڈاؤن کرکے زہر فروخت کرنے والوں کے خلاف کارروائی کریں شہریوں کا مطالبہ۔

ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کے میڈیکل اسپیشلسٹ ڈاکٹر فواد مجید چوہدری نے اخبارنویسوں سے خصوصی گفتگو کے دوران کہا ہے کہ شہر و مضافاتی علاقوں میں پان و گٹکا کی فروخت عروج پرہے اس میں استعمال ہونے والا چونا جو کہ کلی ، سفیدی ، گیس ویلڈنگ کے استعمال میں آتاہے۔

انہوں نے کہا کہ شہریوں کو اس بارے آگاہی نہ ہونے کی وجہ سے شہری اس کو پان کے زریعے استعمال کرتے ہیں جس کے استعمال سے کینسر کے مریضوں میں اضافہ ہو رہاہے ، متعلقہ اداروں کے ذمہ داران کو اس بارے شہریوں کو آگاہی فراہم کرنے کے لئے سیمینارز منعقد کرنے چاہیے تاکہ شہری پان و گٹکا کے استعمال کو ترک کر کے صحت مند زندگی گزارنے کو ترجیح دیں ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.